چلاس میں افسوناک واقعہ، اہم شاہراہ پر نوجوان قتل۔

چلاس(بیوروچیف)چلاس میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 18سالہ نوجوان جاں بحق ہوگیا ۔ذرائع کے مطابق گزشتہ شب چلاس کے کے ایچ ایریا میں نامعلوم افراد نے مہتاب ولد صدیق ساکن پائین گاوں چلاس کو مبینہ طور پر قتل کرکے فرار ہوگئے ہیں ۔اطلاع ملنے پر پولیس کی نفری اور مقامی لوگوں نے مقتول کی نعش کو قریبی ہسپتال منتقل کر دیا اور ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔ادھر چلاس ہسپتال میں مقتول کے لواحقین امیر اور عبدالحلیم نے ڈاکٹروں اور ہسپتال عملہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ قاتلوں کی فائرنگ سے مقتول زخمی ہوگیا تھا جیسے فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا لیکن ہسپتال میں ڈاکٹروںاور عملہ کی عدم موجودگی کی وجہ سے زخمی نوجوان کا خون زیادہ بہہ گیا اور موت واقع ہوئی ۔لواحقین نے مزید کہا کہ مقتول کی موت کا اصل زمہ دار ڈاکٹر اور ہسپتال عملہ ہیں جن کی لاپرواہی کی وجہ سے رات کو پوسٹمارٹم بھی نہیں کیا گیا ہے،جبکہ ڈاکٹروں کا کہنہ ہے کہ مقتول نوجوان ہسپتال لاتے وقت ایکسپائر ہوچکا تھا ،ڈاکٹروں کا یہ بھی کہنہ تھا کہ رات کے وقت پوسٹمارٹم نہیں ہوسکتی، پوسٹمارٹم دن کی روشنی میں کیجاتی ہے ،رات کے اوقات میں پوسٹمارٹم کرنے پر بعد ازاںقانونی دشواریاں پیدا ہوتی ہیں ۔مقتول کے لواحقین نے نوجوان کی نعش کے ساتھ کے کے ایچ چلاس کے مقام پر احتجاج کیا اور ڈاریکٹر ہیلتھ کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔پولیس ذرائع کے مطابق تین مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc