انٹر کالج ضلع کھرمنگ محکمہ تعلیم کے لاپروائی کی داستان بنی ہوئی ہے۔ نظام تعلیم سے لیکر انتظامی معاملات تک بدحالی کا شکار۔

کھرمنگ(نامہ نگار) انٹر کالج ضلع کھرمنگ طلباء سے خالی اوراساتذہ لیس عمارت محکمہ تعلیم کی کوتاہیوں اور بدانتظامی کے شکار ہیں۔ اس کالج کو ایک ایسی جگہ بنایا گیا ہے جہاں دور دراز علاقوں اور نالہ جات کے طلباء کیلئے پونچبا ناممکن ہے، شائد یہی وجہ تھی محکمہ تعلیم نے اس کالج کیلئے ایک بس کا بھی انتظام کیا تھا تاکہ طلباء کیلئے سہولت مل سکے۔ لیکن کھرمنگ کے بہت سے نالہ جات اور علاقوں میں اتنی بڑی بس کو پونچنا مخدوش سڑکوں اور کچے پلوں کے سبب ناممکن ہے۔  اس وقت یہ بس پچھلے کئی سالوں نے کالج انتظامیہ کی بدانتظامی اور غیر ذمہ داری کی کہانی بنی ہوئی ہے۔ اگر بڑی بس کے بجائے دو یا تین ہائی یکس ویگن مہیا کرتے تو مہدی آباد، غاسنگ سے لیکر بلامیک کھرمنگ تک کے طلبا مستفید ہوسکتا تھا لیکن بدقسمتی سے ایسا نہیں ہوسکا یوں اس وقت کالج بس کو نوٹس بورڈ کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔
عمائدین کھرمنگ کے مطابق اُنہوں نے ڈی ڈی ایجوکیشن کو اس بڑی بس کی جگہ دوچھوٹی بسیں (ہائی ایکس) مہیاکرنے کامشورہ دیاتھا تاکہ ایک کھرمنگ پل سے نیچے کی طرف اور دوسری اوپرکی طرف جہاں تک ممکن ہو چلا سکے، لیکن اُنہوں نے حسب معمول کوشش کرنیکا وعدہ کیا تھا جو اب تک وفا نہیں ہوسکے۔
محکمہ تعلیم چاہئے کہ اس معاملے کی انکوائری کریں اور کھرمنگ کالج میں اساتذہ کے بجائے اسٹوڈنٹس کی تعداد کو بڑھانے کیلئے مناسب ٹرانسپورٹ اور بہتر تعلیمی ماحول پیدا کرنے کیلئے انتظامات کو یقینی بنائیں۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc