وزیر اعلی حافظ حفیظ الرحمن ضلع دیامر پر مہربان، اعلانات اور وعدوں کی بارش برسا دیئے۔

اسلام آباد (پریس ریلیز )وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ دیامر کا اور گلگت بلتستان کا روشن مستقبل ہے ہماری حکومت دیامر کی ترقی کیلئے سنجیدگی سے کام کر رہی ہے دیامر گلگت بلتستان کا گیٹ وے ہے بدقسمتی سے دیامرتعلیمی پسماندگی کا شکار ہے تعلیمی پسماندگی دور کرنے کیلئے دیامر کے صحافیوں اور باشعور طبقے کی زمہ داری ہے کہ عوام میں تعلیمی شعور کی بیداری کیلئے کردار ادا کریں ۔ان خیالات کا اظہار وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے دیامر پریس کلب کے ممبران صدر محمد قاسم کی قیادت میں ملاقات کیلئے آ ئے ہوئے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ دیامر میں اس وقت بہت سے ترقیاتی منصوبے منصوبے چل رہے ہیں اور ہماری حکومت کی ترجیح ہے کہ دیامر کی پسماندگی اور بالخصوص تعلیمی پسماندگی دور ہو اس کیلئے حکومت موثر اقدامات کر رہی ہے ہم چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے دوسرے اضلاع کی طرح دیامر کا تعلیمی مستقبل بھی روشن ہو انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے کیڈٹ کالج اور قراقرم یونیورسٹی کا کیپمس اہم کردار ادا کرے گاہماری حکومت نے دیامر میں خواتین کی تعلیم کو پروان چڑھانے کیلئے دس کے قریب لڑکیوں کے سکولوں کی منظوری دی ہے وزیر اعلی نے مزید کہا کہ دیامر بھاشا ڈیم کے ساتھ گلگت بلتستان کا معاشی مستقبل وابستہ ہے اس منصوبے سے گلگت بلتستان معاشی حوالے سے خود کفیل ہوگا دیامر بھاشا ڈیم اور سی پیک ملک کی ترقی کے ضامن ہیں لیکن کچھ طاقتیں ان منصوبوں کو سبوتاثر کرنے کیلئے سرگرم عمل ہیں لیکن عوام کے تعاون کی یہ تمام سازشیں ناکام ہوں گی انہوں نے کہا کہ پہلی مرتبہ واپڈا کے ساتھ تمام محکموں کرایا گیا ہے جس میں ڈیم سے سرکاری املاک ،اراضی اور دیگر عمارتوں کا ڈیٹا جمع کیا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ داریل تانگیر ضلع کے ہیڈ کوارٹر کے لئے داریل اور تانگیر سے پچاس پچاس عمائدین پر مشتمل کمیٹی تشکیل دیا جارہا ہے جو ہیڈ کوارٹر کا تعین کرینگے اس جرگے میں ممبران اسمبلی کو شامل نہیں کیا گیا ہے اسطرح داریل تانگیر اور گوپس اور یاسین کے اضلاع کا حل نکالیں گے ،ہنزہ نگر مشرف دور میں ضلع بنا تھا لیکن پی پی کے دور ختم ہونے تک ضلعی ہیڈ کوارٹر کا مسئلہ حل نہیں ہوسکا ہماری حکومت نے آتے ہیں یہ مسئلہ حل کر دیا ہم چاہتے ہیں ہمارے دور حکومت میں داریل تانگیر کے ضلع کا ہیڈ کوارٹر کا تعین ہو اور ہیڈ کوارٹر کے لئے ترقیاتی کام بھی شروع کر سکیں ،انہوں نے مزید کہا کہ بٹو گا روڑ بھی دیامر کااہم منصوبہ ہے اس کے علاوہ داریل اور گلگت کو بھی لنک کرنے کیلئے براستہ کارگا ہ سٹرک کا منصوبہ بھی زیر غور ہے ،انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے جو ترقیاتی کام دو برسوں میں کئے اتنے کام گزشتہ ستر برسوں میں نہیں ہوئے ،انہوں نے کہا کہ نیا سو بیڈ اسپتال کی انکوائری فائنل مراحل میں ہے جلد ہی کام کا آغاز ہوگا انہوں نے کہا کہ دیامر سے تعلق رکھنے والے ممبران اسمبلی نے جتنی سکیموں کی ڈیمانڈ کی ہے اے ڈی پی میں رکھی گئی ہے انشاءاللہ دیامر کے عوام چند ماہ میں نمایاں تبدیلی محسوس کرینگے انہوں نے کہا کہ آئندہ گلگت بلتستان کے سکولوں اور کالجوں کے پوزیشن ہولڈرز طلبہ کو عمرے پر بھیجنے کی پالیسی بنا رہے ہیں ۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc