ضلع شگر میں محکمہ صحت کی غفلت، ہپیٹائٹس کے مرض میں مسلسل اضافے کا انکشاف۔

شگر(ممتازشگری سے)محکمہ صحت کی مجرمانہ غفلت، ڈاکٹرہے نہ ادویات،مریض نرسوں کے رحم وکرم پر ، 60فیصدمریضوں میں ہیپٹائٹس کا انکشاف، بی ایچ یو ہسپتال تسر مسائلستان بن گیامسائل حل کرنے والاکوئی نہیں،تفصیلات کے مطابق بی ایچ یوہسپتال تسرمیں ادویات اور ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ڈاکٹر کی مسلسل غیر موجودگی کے باعث مریض نرسوں سے چیک کرانے پر مجبور ہے۔ عرصہ پہلے ایک ڈاکٹرکو تعینات کیا گیا تھا۔مگر وہ کئی عرصے سے غائب ہے جسکی وجہ سے مریضوں کو چیک اپ کیلئے کئی گھنٹوں کا سفر طے کر کے سکردو کا رخ کرنا پڑرہا ہے۔اُدھرڈاکٹر ساجدشگری نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ تسرسے آنے والے 60فیصد مریض ہیپٹائٹس کے مرض میں مبتلا ہے جوکہ انتہائی تشویشناک اور لمحہ فکریہ ہے۔عمائدین تسرنے بھی اس مسئلے کو انتہائی خطرناک قرار دیتے ہوئے محکمہ صحت کے حکام کو فوری طورپر ایکشن لے کر فری ویکسین ٹیم بھیجنے کا بھرپورمطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ محکمہ صحت لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنا بند کریں،اعلیٰ حکام جلد نوٹس لیں کر علاج کابندوبست کریں،ان کا مزید کہنا تھ اکہ آٹھ ہزارکی آبادی پر مشتمل یونین کی واحد بی ایچ یو کو اب تک اپ گریڈ نہ کرنا سمجھ سے بالاتر ہے، انہوں نے وزیراعلیٰ سمیت عوامی نمائندے اورمحکمہ صحت کے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ اہسپتال کو جلد ازجلداپ گریڈکیا جائے تاکہ مریضوں کو میلوں کا سفرطے کرنانہ پڑے اور علاج کے سہولیات گھر کی دہلیزپر میسرآسکیں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc