ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن شگر نے کارکردگی بہتر نہ کرنے والے اساتذہ کے خلاف اہم قدم اُٹھانے کا فیصلہ کرلیا۔

ٓ شگر(عابدشگری)کسی بھی قوم کی ترقی کا دارومدار بہتر تعلیمی نظام پر ہے۔ اور قوم کی مستقبل اساتذہ کی ہاتھوں میں ہوتا ہے۔ لہذاشگرکے سرکاری سکولوں کے اساتذہ کیلئے سزا اور جزاء کا نظام متعارف کیا جارہا ہے۔بہتر کارکرگی کا مظاہرہ کرنے والے اساتذہ کو ایوارڈ جبکہ خراب پرفارمنس کے حامل اساتذہ کی سالانہ ایکریمنٹ روک دی جائے گی۔محکمہ تعلیم شگر کو پورے گلگت بلتستان کیلئے مثالی ادارہ بنانا ہمار ا مشن ہے جس کیلئے تمام اساتذہ کو اپنا کردار اداکرنے کی ضرورت ہیں۔ان خیالات کا اظہار ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن شگر محمد نذیر شگری نے ہائی سکول گلاب پور میں سکول ڈویلپمنٹ پلان کے سلسلے میں ہیڈ ماسٹروں اور اساتذہ کو دی جانی والی تربیتی نشست کے اختتامی تقریب خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اساتذہ اپنے تدریسی عمل اور بہتر نظم و نسق کے ذریعے اپنے کارکردگی بہتر بنائیں۔اور سکولوں کی نظام اور تدریسی امور میں تبدیلی لائیں۔اساتذہ طلباء کیلئے رول ماڈل ہے۔ لہذا اساتذہ اپنے آپ کو رول ماڈل کا اہل بنائیں۔انہوں نے کہااس سال سے سکولوں کی مانیٹرنگ کا نظام سخت کیا جارہا ہے ۔ کسی استاد کو ڈیوٹی سے رعایت نہیں دی جائے گی۔ بہتر کارکردگی کا مظاہرہ نہ کرنے والے اساتذہ کیخلاف کاروائی کی جائے گی۔ان کی سالانہ ایکریمنٹ کا دارومدار اساتذہ کی پرفارمنس پر منحصر ہوگا۔لہذا تمام اساتذہ بچوں کی بہتر مستقل کیلئے سخت محنت کریں۔کیونکہ یہ پیشہ انبیاء کا پیشہ ہونے کیساتھ ہماری ذمہ داری بھی بڑھ جاتی ہے کہ قوم کا مستقبل ہماری ہاتھوں میں ہوتا ہے۔ اگر ہم اپنے فرائض میں کوتاہی کرینگے تو قوم کیساتھ خیانت ہوگی۔اس سے پہلے شگر کے چار ہائی سکولوں میں ہیڈ ماسٹروں اور نائب ہیڈ ماسٹروں کو سکول ڈویلمپنٹ پلان کی تیاری کے حوالے سے چارروزہ تربیت دی گئی۔ جہاں محکمہ تعلیم شگر کے ماسٹر ٹرینرز محمد اسلم اور ناصر حسین نے اساتذہ کو پاورے سال کیلئے اپنے اپنے سکول میں بہتر طریقے سے سکول چلانے اور بچوں کی بہتر تدریس کیلئے لائحہ عمل طے کرنے کی جدید طریقوں سے آگاہ کیا گیا۔ اور اساتذہ پر زور دیا کہ انہیں سکولوں میں لاگو کریں ۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc