سرفرانگاہ کار ریلی کو دیکھنے کیلئے آنے والے شائقین کو تین کلومیٹر دور روک کر پیدل جانے پر مجبور کرکے شائقین کو ذہنی ازیت میں مبتلا کردیا جبکہ بچوں کو لیکر آنے والے شائقین راستے ہی سے واپس چلے گئے، لیکن سرکاری افسران وی ائی پی کلچرل کو فروغ دیتے ہوئے ان تمام قواعد ضوابط سے آذاد۔

سکردو(نامہ نگار) سرفرانگاہ کار ریلی کو دیکھنے کیلئے انے والے شائقین کو تین کلومیٹر دور روک کر پیدل جانے پر مجبور کرکے شائقین کو ذہنی اذیت میں مبتلا کردیا جبکہ بچوں کو لیکر انے والے شائقین راستے ہی سے واپس چلا گیا جبکہ سرکاری افسران اور وی ائی پی کلچرل کو فروغ دیتے ہوئے ان کو گاڑیوں سیمت جانے کی اجازت دیا۔ جبکہ سکردو شہر سے کئی خواتین نے اپنی کاریں لیکر ریلی دیکھنے کیلئے آئی تھی انہیں بھی تین کلومیٹر دور روکا گیا تو مایوس واپس جانا پڑا۔ خواتین نے میڈیا کو بتایا ہمیں اپنے بچوں کو لیکر سکردو شہر سے تمنا کرکے جب سرفرانگاہ کار ریس دیکھنے آئی تو پولیس اور سکردو کے انتظامی اہلکاروں نے ہمیں تین کلومیٹر دور روکا گیا اور ہمیں بتایا کہ گاڑی یہاں روک کر یہاں سے پیدل جاو جبکہ ہم نے اصرار بھی کیا ہمیں اپنی گاڑی کے ساتھ جانے دو ہم تین کلو میٹر پیدل جا نہیں سکتی۔ ہم آپ کے ماں بہن ہے ہم نے فریاد بھی کیا اس کے باوجود ہماری ایک بھی نہ سنی اور ہمیں جانے نہیں دیاجبکہ سرفرانگاہ کے میدان پر کار پارکنگ کیلئے سنکٹروں کنال اراضی بھی تھا اس کے تمائشیوں کی دور رکھنے کی پالیسی بنا کر ناکام بنانے کی سازش کیا گیا تھا۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc