گلگت بلتستان میں 3G/4G سروس کی فراہمی میں سب سے بڑی رکاوٹ کون ہے؟ پی ٹی اے نے نام بے نقاب کردیا۔

اسلام آباد(پ،ر) دو ماہ قبل SCO کی جانب سے دو ماہ قبل گلگت بلتستان میں تھری اور فور کی انٹرنیٹ سروس ٹرائل بنیاد پر شروع کرنے کے بعد اچانک سروس معطل کرنے پر گلگت بلتستان بھر میں ادارے کے خلاف احتجاج کی دھمکیاں دی جاررہی ہے۔ دوسری طرف آذاد کشمیر میں فری ٹرائل سروس گزشتہ کئی ماہ سے چل رہا ہے اور گلگ بلتستان کے عوام معمولی قیمت کی سم کئی ہزار کی قیمت پر آذاد کشمیر سے خریدنے پر مجبور ہیں کیونکہ گلگت بلتستان میں بھی آذاد کشمیر سریل کے انٹرنیٹ سم پر باقاعدہ انٹرنیٹ چل رہا ہے۔ گزشتہ ہفتے عوامی احتجاج کی کال پر ادارے کی جانب سے بہت جلد گلگت بلتستان میں انٹرنیٹ سروس شروع کرنے کا وعدہ کیا اور پاکستان ٹیلی کام اٹھارٹی کو انٹرنیٹ سروس کی بندش میں ذمہ دار ٹھرایا وہیں اپنی سروس کو بہتر کرنے کے بجائے سروس کی بحالی کیلئے پرُامن احتجاج کرنے والوں کو دھمکی بھی دے ڈالی۔ گلگت بلتستان کے معروف سوشل ایکٹیوسٹ انجینئر شبیر حسین نے اس سلسلے میں پی ٹی اے کو ایمیل کیا تو معلوم ہوا کہ گلگت بلتستان میں انٹرنیٹ کی راہ میں رکاوٹ کوئی اور نہیں بلکہ SCO کا ادارہ ہی ہے جو نہ خود سروس دینے کیلئے تیار ہیں نہ دیگر کمپینوں کو کام کرنے دیا جارہا ہے۔ عوامی حلقوں میں اس حوالے سے شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے ادارے کو چاہئے کہ عوام سے کئے گئے وعدے کو پورا کریں اور گلگت بلتستان بھر میں انٹرنیٹ کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc