گلگت بلتستان کے وکلاء بھی ایکشن میں آگئے، پہلی بار مقامی عدالتوں اور ججز کے حوالے سے اہم مطالبہ اور احتجاج کی دھکمی۔

گلگت (پ،ر)گلگت بلتستان بارکونسل ، سپریم اپیلٹ کورٹ بار ایسوسی ایشن اور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے مشترکہ اور متفقہ طور پر سپریم اپیلٹ کورٹ، ہائی کورٹ اور گلگت بلتستان اور تمام ماتحت عدالتوں میں ہفتہ وار بروز جمعرات ہڑتال کرکے سارے گلگت بلتستان میں احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔ آج مورخہ 3 فروری 2018 کو گلگت بلتستان بار کونسل ، سپریم اپیلٹ کورٹ بار ایسوسی ایشن، گلگت بلتستان ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کا نمائندہ اجلاس زیر صدارت جاوید احمد وائس چیئرمین گلگت بلتستان بار کونسل منعقد ہوا . اجلاس میں سپریم اپیلٹ کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر احسان علی ایڈووکیٹ ، جنرل سیکریٹری جوہر علی ایڈووکیٹ اور ہائی کورٹ بار کے صدر اسداللہ خان ایڈووکیٹ نے خصوصی طور پر شرکت کی . اجلاس میں عرصہ دو سال سے جاری وکلاء تحریک اور وکلاء مطالبات پر ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا . اجلاس میں حسب ذیل وکلا مطالبات پر غور و خوض کیا گیا۔
1. سپریم اپیلٹ کورٹ میں خالی نشست پر گلگت بلتستان کے وکلاء ہی میں سے میرٹ پر تعیناتی ہو.
2. چیف کورٹ میں گورننس آرڈر کی آرٹیکل 69 (1) کی حقیقی روح کے مطابق 60 % وکلاء کی تعیناتی یقینی بنایا جائے. 3. ماتحت عدلیہ میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججوں کی تعیناتی میں چیف کورٹ کے جوڈیشل رولز کے تحت وکلاء کے 40 % کوٹہ کو پورا کیا جائے۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 16 فروری 2018 سے ہفتہ میں ایک دن بروز جمعرات بشمول سپریم اپیلٹ کورٹ اور چیف کورٹ پورے گلگت بلتستان کی عدالتوں کا بائیکاٹ کرکے باقاعدہ جلسے ، جلوس اور دھرنوں وغیرہ جیسے پر امن صورتوں میں وکلاء مطالبات کی تکمیل تک تمام گلگت بلتستان میں ڈسٹرکٹ سطح تک وکلاء احتجاج کو پھیلایا جائے گا. پہلے مرحلے میں ہفتہ میں صرف ایک دن گلگت بلتستان کی تمام عدالتوں کا بائیکاٹ کیا جائے گا اگر حکومت نے وکلاء مطالبات پر فوری عملدرآمد نہ کیا اور گورننس آرڈر، قانون اور رولز کے مطابق میرٹ پر وکلاء کی بطور ججز تعیناتی کے ذریعہ متعلقہ عدالتوں ، سپریم اپیلٹ کورٹ، ہائی کورٹ اور ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس کو فوری طور پر مکمل نہ کیا گیا تو وکلاء سردیوں کی تعطیلات کے فوراً بعد اپنی احتجاجی تحریک کے دائرہ کار کو مزید توسیع دینے پر مجبور ہو نگے جس کے نتیجے میں تمام عدالتی نظام مفلوج ہو نے کی ذمہ دار حکومت گلگت بلتستان ہوگی۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc