سانحہ قصور ، ڈاکٹر شاہد مسعودنے شہباز حکومت کا پول کھول دیا، چیف جسٹس کا نوٹس

اسلام آباد(ویب ڈیسک)معروف اینکر پرسن ڈاکٹر شاہد مسعود نےکہا کہ چیف جسٹس ثاقب نثار سے گزارش ہے کہ اس بات کی کھوج لگائیں کہ حکومت پنجاب نےزینب قتل کیس میں قوم سے انتہائی خوفناک جھوٹ بولا ہے اور یہ انکشاف کیا ہے کہ قصور میں زینب قتل میں ملوث گرفتار ملزم عمران کوئی عام شخص نہیں ہے اورنہ ہی کوئی ذہنی مریض ہے بلکہ یہ ایک بین الاقومی مافیا کا ایک انتہائی اہم فعال رکن ہے ۔ اس مجرم کو پاکستان کی اعلیٰ اورمضبوط شخصیات کی پشت پناہی حاصل ہے اورا س کےکم از کم 37سے چالیس بینک اکائونٹس ہیں جن میں سے اکثریت غیرملکی کرنسی اکائونٹس ہیں ان اکائونٹس میں یور ، ڈالرز اورپائونڈز کی ٹرانزیکشن باہر سے ہوتی ہیں

سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے اننہوں نے مزید کہا کہ یہ کروڑوں اربوں کا کھیل ہے یہ جس بین الاقوامی ریکٹس کےلئے کام کرتا ہے اس کی تحقیقات ہونی چاہیے ۔ نہ یہ پاگل ہے نہ ہی یہ بے وقوف ہے اوراس کو سیاسی اورغیر سیاسی شخصیات کی پشت پناہی حاصل ہے ۔ اوریہ وائلنس چائلڈ فونو گرافی جو کہ پاگل یا ذہنی مریض قسم کے لوگوں کےلئے بچوں سے تشدد سے بھری ویڈیوز انٹرنیٹ پر دیکھتے ہیں اس کےلئے یہ لوگ کام کرتے ہیں۔ اس سے قبل واقعات بھی اسی سلسلے کی کڑی ہیں ۔ یہ شخص اکیلا نہیں ہے ، اس میں ایک وفاقی وزیر اور ایک پنجاب کی اہم شخصیت اس میں ملوث ہے ۔

میرے پاس اس وفاقی وزیرکا نام موجود ہے ۔ اس کی تحقیقات چیف جسٹس آف پاکستان کروائیں ، اس کی تحقیقات آرمی چیف کروائیں ۔ اس کو دیکھا جائے کہ اس لڑکے کے اکائونٹس کتنے ہیں ۔ یہ لڑکا ذہنی مریض نہیں ہوسکتا جس کے سینتیس سے چالیس بینک اکائونٹس ہیں جن میں کروڑوں روپے کی ٹرانزیکشنز ہوئی ہیں ۔ یہ لوگ اللہ کی پکڑمیں آگئے ہیں۔ یہ لوگ اس لڑکے کو مروا دیں گے ۔ سکیورٹی ادارے اس کی خود تحقیقات کریں ۔ ڈاکٹر شاہد مسعود کے مذکورہ پروگرام پر چیف جسٹس ثاقب نثار نے بڑا ایکشن لے لیا اورفریقین کونوٹس جاری کردیئے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc