گلگت بلتستان میں مقیم مہاجرین کو سرحد پار بچھڑے خاندانوں سے ملایا جائے اور بارڈر کھول دیا جائے. ڈاکٹر انور علی رینگچن

سکردو(نامہ نگار) مہاجرین کرگل لداخ کی بنیادی تمام مسائل حل کرنے کیلئے فوری اقدامات اٹھایا جائے یہ بات ال مہاجرین کشمیر لداخ ٹیاقشی کے صدر ڈاکٹر انور علی رینگچن نے مہاجرین کرگل لداخ پنجاب زون کے صدر علی حسن کے اعزاز میں دیے گئے عشائیے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ان کا مزید کہنا تھا گلگت بلتستان میں مقیم مہاجرین کو وہ حقوق حاصل نہیں جو آزاد کشمیر میں مقیم مہاجرین کو حاصل ہیں. آزاد کشمیر میں پانچ مختلف جگہوں سے بارڈر کھول کر بچھڑے ہوئے خاندانوں کو ملنے کا موقع دیا ہوا ہے اور کرگل سکردو لداخ خپلو روڈ کو نہیں کھولا جارہا ہے. جو سراسر زیادتی ہے. مہاجرین کرگل لداخ پنجاب زون کے صدر علی حسن نے کہا مہاجرین کو سرفرانگاہ میں ایک بنجر اور ریگستان جگہ دے کر منہ بند کیا ہوا اور سرفرانگاہ میں پانی نکلنے کیلئے حکومتی سطح پر کوئی اقدامات نہیں اٹھایا . 1971 سے اب تک مہاجرین کو سر چھپانے کے لئے کوئی جگہ نہیں دی گئی ہے.مہاجرین کشمیر لداخ ٹیاقشی کے جنرل سیکرٹری محمد اقبال امجد پردیسی فردوس جمال حسن امین زبیر احمد اور دیگر نے بھی اپنے خطاب میں پاک بھارت دونوں حکومتوں سے مطالبہ کیا کہ بچھڑے ہوئےخاندانوں کو ملانے کیلئے فوری اقدامات اٹھایا جائے.

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc