دلاور عباس قتل کیس کے دو مرکزی ملزمان گرفتار، پھانسی کا مطالبہ۔

لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور میں گلگت بلتستان کے نوجوان طالب علم پر تشدد کے واقعے میں ملوث دو مرکزی ملزمان کو پولیس نے گرفتار کرلیا جبکہ دیگر ملزمان کی گرفتاری کیلئے مسلسل چھاپے مارے جارہے ہیں،تفصیلات کے مطابق لاہور ڈومکی گراونڈ میں کھیل کے دوران معمولی تکرار پر بیس کے قریب لڑکوں نے بلتستان سے تعلق رکھنے والے سکنڈائر کے اسٹوڈٹنس دلاور عباس کو بلوں سے مار مار کر لہولہان کردیا تھا اُسے شدید زخمی حالت میں جنرل ہسپتال لاہور منتقل کیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاکر تین بعد جاں بحق ہوگئے۔ اس خبر پر گلگت بلتستان کے عوام میں شدید غم غصہ پایا جاتا ہے گلگت بلتستان سمیت پاکستان بھر میں مقیم گلگت بلتستان کے باشندے سراپا احتجاج ہیں اور پنجاب حکومت سے تمام ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کرکے سرے عام پھانسی دینے کا مطالبہ زور پکڑ رہا ہے۔ عوامی غم اور غصے کو دیکھ کر چیف سیکرٹیری گلگت بلتستان نے بھی پنجاب حکومت کو ایک خصوصی مراسلے میں ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا تھا۔ سوشل میڈیا پر دنیا بھر میں مقیم گلگت بلتستان کے باشندوں نے اس عمل کو حکومت کی نااہلی قرار دیا ہے کیونکہ گلگت بلتستان میں بنیادی تعلیم اور معاشی وسائل میسر نہ ہونے کی وجہ سے گلگت بلتستان کے باشندوں کو مختلف شہروں کی طرف حصول تعلیم اور روزگار کیلئے ہجرت کرنا پڑتا ہے اور ماضی میں بھی اس قسم کے کئی افسوسناک واقعات پیش آچُکے ہیں لیکن انصاف نہ ملے۔لہذا حکومت گلگت بلتستان کو چاہئے کہ پاکستان بھر میں مقیم گلگت بلتستان کے باشندوں اور زیر تعلیم طلباءکی تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے ٹھوس اقدامات اُٹھائیں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc