خالصہ سرکار کی اصطلاح قرآن و سنت سے متصادم ہے، علمائے کھرمنگ نے متفقہ فتوی جاری کردیا۔

کھرمنگ(بیورو رپورٹ) علمائے کھرمنگ نے خالصہ سرکار کی اصطلاح کو قرآن و سنت سے متصادم قرار دیا ہے۔ ضلع کھرمنگ کے ہیڈ کوارٹر کے لئے مجوزہ زمین کو عوامی ملکیت قرار دیتے ہوئے علاقہ مکینوں کا واضح حق قرار دے دیا گیا۔ گزشتہ روز سادات گوہری کے تحت خالصہ سرکار اور حق ملکیت کی قرآن و سنت کی روشنی میں وضاحت و صراحت کے غرض سے ایک اہم اجلاس منعقد ہوا۔ شیخ محمد اسماعیل نجفی آف کمنگو کی زیر صدارت اجلاس میں کھرمنگ بھر سے 18 علمائے کرام نے شرکت کی۔ اجلاس میں انجمن امامیہ بلتستان کی نمائندگی شیخ فدا حسین عبادی نے کی۔ علماء نے حق ملکیت کی شرعی وضاحت کرتے ہوئے ضلع کھرمنگ کے ہیڈ کوارٹر کے لئے مجوزہ اراضی کو عوامی ملکیت قرار دے دیا ۔ اجلاس میں شریک علماء نے تحریری قرارداد میں اعلان کیا کہ خالصہ سرکار کی اصطلاح قرآن و سنت کے بر خلاف ہے۔ خالصہ سرکار محض ڈوگرہ راج کی اصطلاح ہے۔ حکومت گوہری سمیت جہاں چاہے ہیڈکوارٹر بنا لے مگر عوامی ملکیت تسلیم کرتے ہوئے معاوضہ بھی ادا کرے۔ ہیڈ کوارٹر کی تعمیر میں تاخیر تشویشناک ہے۔ اجلاس میں شریک تمام علماء نے تحریری قرارداد پر دستخط کئے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc