بلتستان میں سردی کی لہر عروج پر۔ سردی کی شدد منفی 22 تک پہنچ گئی۔

سکردو( پ،ر) بلتستان میں سردی کی شدت میں اچانک اضافہ ہوگیا ہے سخت سردی کے باعث مختلف دریا جم کر پل بن گئے لوگوں نے برف کے اوپر سے ٹریکٹر گزارنا شروع کیا ہے۔ سکردو میں کم سے درجہ حرارت منفی 18جیکہ بالائی علاقوں میں کم از کم منفی 22تک گر گیا۔ سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے عوام گھروں میں محصور ہو کر رہے گئے۔شہری علاقوں میں بجلی غائب جبکہ ایندھن کیلئے استعمال ہونے والے لکڑی کی قیمت آسمانوں کو چھو گئے لیکن پرائس کنٹرول اٹھارٹی کا کہیں وجود بھی نظر نہیں آتا۔یاد رہے کئی درجن برف پوش برفانی گلیشرز اور کے ٹو سیاچن کی سرزمین بلتستان دنیا کا دوسرا سرد ترین مقام ہے جہاں پر 1994/95میں شدید سردی ریکارڈ کی گئی تھی۔ لیکن عدم سہولیات کی وجہ سے عجیب قسم کی بیماریاں اور ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی عدم موجودگی نے پرایئوٹ کلنکس قصائی بن گئے ہیں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc