عوامی احتجاج اور اس کے مثبت اثرات کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔ تحریر: انجنیئر شبیر حسین

جی بی کی طرف سے تاریخ کے کامیاب ترین احتجاج کے کئی ایک مثبت پہلو سامنے آئے ہیں ،جیسے حفیط حکومت کی طرف سے جی بی عوام کو فرقہ وارانہ ، علاقائی اور لسانی بنیادوں پر تقسیم کرنے کی تمام تر کوششیں اس غیور اور باضمیر قوم نے اپنے اتحاد سے پیروں تلے کچل دیا ، اور اسی اتحاد کے طفیل عوام نےاس مغرور اور فرعونیت سے بھری حکومت کی گردن سے اتحاد فاونڈری کا سریہ نکال باہر کر دیا ، عوامی اتحاد کا یہ مظاہرہ اس سے پہلے بھی ایک بار دیکھنے کو ملا تھا جب 2014 میں گندم سبسڈی کی تحریک چلی تھی ، اس تحریک کے نتیجے میں جو اتحاد و اتفاق کی فضاء قائم ہوئی تھی اس اتحاد کا پیغام عوام الناس تک پہنچانے کیلئے عوامی ایکشن کمیٹی گلگت کے وفد نے سکردو اور بعد ازاں سکردو سے ایک وفد نے جس میں راقم بھی شامل تھا گلگت دیامر ، غذر اور ہنزہ کا دورہ کیا تھا ، اور بلتستان کے عوام کی طرف سے خیر سگالی کے پیغامات متذکرہ اضلاع کی عوام تک پہنچیا تھا ، اس طرح کے وفود کے تبادلے سے گلگت بلتستان کے مختلف علاقوں کی عوام کو ایک دوسرے کو سمجھنے کا بہت اچھا موقع ملا تھا ۔ آج بھی اس اہم کامیابی کیبعد میں سمھجتا ہوں کہ سابقہ کامیاب تحریک کی کامیابی کیبعد کی تاریخ کو دہراتے ہوۓ عوامی ایکشن کمیٹی اور انجمن تاجران کے وفود کا گلگت اور بلتستان ریجنز میں تبادلہ ہونا چاہیے ، جس سے جی بی کی عوام (جسے 70 سالوں میں لڑاو اور حکومت کرو کی پالیسی کے ذریعے ایک دوسرے سے ڈرا کر دور رکھا گیا ہے )کو قریب آنے میں مدد ملے گی۔ اس سلسلے میں ، میں عوامی ایکشن کمیٹی کے روح رواں مولانا سلطان رئیس صاحب سے گزارش کرتا ہوں کہ آپ فوری طورگلگت ریجن کے ( تمام چھ اضلاع) سے عوامی ایکشن کمیٹی اور انجمن تاجران کا ایک وفد لیکر بلتستان ریجن کا دور کریں اور جی بی کے عوام کے درمیان اس تحریک کے نتیجے میں پیدا ہونے والے اتحاد و اتفاق کا پیغام مزید موثر انداز میں پہنچانے کی کوشش کریں ، اور عوام کو مزید قریب لانے کیلئے اپنی صلاحیتں بروۓ کار لائیں اس سلسلے میں دیامر غذر اور ہنزہ سے سنی ، اسماعیلی علماء کو بھی ساتھ لے لیں تو سونے پہ سہاگا ہو گا ، واپسی پر بلتستان ریجن سے عوامی ایکشن کمیٹی اور انجمن تاجران کے ساتھ شیعہ ، سنی ، نوربخشی علماء کے ایک گرینڈ وفد کو بھی گلگت ریجن کے مختلف علاقوں کا دورہ کروائیں تاکہ حفیظ حکومت کی گلگت بلتستان کی عوام کو لڑانے کی تمام تر سازشوں کا مزید موثر جواب دے سکیں ۔ اور حفیط الرحمن مائنڈ سیٹ کو مستقبل مین بھی شکست دے سکیں ،میں سمجھتا ہوں یہ اقدام جی بی عوام کی طرف سے ان تمام قوتوں کو ایک پیغام ہو گا جو ہمیں ایک دوسرے سے ڈراکر اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کرتی آ رہی ہیں، مجھے امید ہے کہ عوامی ایکشن کمیٹی گلگت اور بلتستان کے رہنماء میری اس تجویز پر ضرور غور کریں گے تاکہ جی بی کی اتفاق ا اتحاد کی فضا ہماری آنے والی نسل کو ایک پر امن فضاء فراہم کر سکیں ، یہ آپ لوگوں کی طرف سے جی بی عوام کو ایک بہت عظیم تحفہ ہو گا ۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc