گلگت بلتستان میں کرپٹ پولیس آفیسرز کا گھیرا تنگ،وفاقی وزیر داخلہ نے بڑے اقدام کا حکم دے دیا۔

گلگت ( ڈسٹرک رپورٹر) نظام نہ ہونے کی وجہ سے پولیس گردی گلگت بلتستان میں عام ہے جہاں عوام پولیس کو ایک طرح دہشت کی علامت سمجھے جاتے ہیں۔ لیکن وقت کی تبدیلی کے ساتھ محکمہ پولیس میں موجود کرپٹ عناصر کا گھیرا تنگ کیا جارہا ہے۔گلگت انسپکٹر جنرل پولیس صابر احمد نے سنیئر صحافی عبدالرحمن بخاری سے خصوصی طور پر بات کرتے ہوئے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ گلگت بلتستان میں پولیس کا نظام جب سے قائم ہوا اس وقت سے لیکر اب تک کوئی ریکارڈ نہیں تھا اس وجہ سے پولیس ڈیپارٹمنٹ کے حوالے معلوم کرنا مشکل تھا کہ میرٹ پر کس حد تک عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ ہم نے اس سلسلے میں کام شروع کیا ہے تاکہ محکمہ پولیس میں شفافیت کو یقینی بنایا جاسکے۔ دوسری طرف وفاقی وزیر داخلہ کی طرف سے ایک مراسلے میں گلگت بلتستان پولیس آفیسروں کے اثاثوں کی چھان بین کا حکم دیدیا ، آئی جی پی نے طویل عرصہ سے تعینات افسروں کی فہرست طلب کرکے اثاثوں کی چھان بین شروع کر دی ہے ۔ اس سلسلے میںآئی جی پی نے گلگت بلتستان میں گزشتہ کئی سالوں سے ایک ہی اسٹیشن میں تعینات پولیس آفیسروں اور ملازمین کی فہرستیں طلب کر لی ہیں آئندہ چند روز میں تمام پولیس آفیسروں و ملازمین کے اثاثوں کی جانچ پڑتال شروع کی جائیگی اور حتمی رپورٹ وفاقی وزیر داخلہ کو ارسال کی جائیگی ۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc