گلگت بلتستان میں نافذ انکم ٹیکس ایکٹ 2012 کو مستقل طور پر ختم کرنے کے حوالے سے اہم فیصلہ۔

اسلام آباد( بیورو رپورٹ) گلگت بلتستان کونسل اسلام آباد میں عوامی ایکشن کمیٹی، انجمن تاجران، اور گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کی موجودگی میں اہم اجلاس۔ تفصیلات کے مطابق چیرمین ورکنگ ورکنگ گروپ گروپ گلگت بلتستان کے اجلاس میں پارلیمانی کمیٹی برائے ورکنگ گروپ کے ممبران سنیئر وزیر حاجی اکبر تابان پارلیمانی کمیٹی برائے ٹیکس ایشو، محمد اشرف صدا چیرمین اسٹینڈینگ کمیٹی جی بی کونسل،سعد افضل چیرمین PAC اسلام آباد،سید عباس رضوی ممبر جی بی کونسل،رانا فرمان علی وزیر بلدیات، اورنگزیب خان وزیر قانون گلگت بلتستان، کپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع خان اپوزیشن لیڈر گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی، کاچو امتیاز حیدر خان ممبر قانون ساز اسمبلی، مولانا سلطان ریئس چیرمین عوامی ایکشن کمیٹی، غلام حسین اطہر صدر انجمن تاجران سکردو، محمد ابراہیم مرکزی صدر انجمن تاجران گلگت بلتستان نے شرکت کی۔ اجلاس میں پارلیمانی کمیٹی کے تینوں مطالبات منظور کئے گئے اور گلگت بلتستان میں نافذ انکم ٹیکس ایکٹ 2012 کومستقل طور پر ختم کرکے نیا انکم ٹیکس ایکٹ گلگت بلتستان گورنمنٹ اور اسمبلی کے مشاورت سے تیار کرکے منظور کیا جائے گا۔

مقتدر حلقوں کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کی متنازعہ کے سبب گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کی کوئی آیئنی حیثیت نہیں ہے لہذا جب تک گلگت بلتستان کو آئین ساز اسمبلی نہیں دیتے مزید کسی بھی قسم کے ٹیکس کی بات کرنا عوام کو مشتعل کرنے کی سازش سمجھا جائے گا لہذا کمیٹی کو اس حوالے سے غورفکر کرنے کی ضرورت ہے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc