عوامی تحریک کے زیراہتمام آل پارٹیز کانفرنس,تخت لاہور کو الٹی میٹم۔

لاہور(ویب ڈیسک)عوامی تحریک کے زیراہتمام آل پارٹیز کانفرنس نے مطالبہ کیا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاﺅن ریاستی دہشت گردی کا بدترین واقعہ ہے۔ جسٹس باقر نجفی رپورٹ کے مطابق ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔ واقعہ میں نوازشریف‘ شہبازشریف‘ رانا ثناءاور دیگر افسران ملوث ہیں۔ کانفرنس کے اعلامیہ کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف‘ وزیر قانون رانا ثناءاللہ کو 7جنوری تک استفعے کی مہلت دی گئی ہے۔ اعلامیہ میں مزید کہا گیا ختم نبوت قانون میں تبدیلی پر مسلم لیگ (ن) کی حکومت اخلاقی جواز کھو چکی ہے۔ اجلاس میں کہا گیا شریف خاندان کو کوئی این آر او دیا گیا تو قوم اسے قبول نہیں کرے گی۔ اعلامیہ میں کہا گیا اگر وزیراعلیٰ‘ وزیر قانون نے استعفیٰ نہ دیا تو 8جنوری کو سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس دوبارہ ہو گا۔ جس میں آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائیگا۔ پاکستان عوامی تحریک کے رہنما ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ اے پی سی کا ایجنڈا سانحہ ماڈل ٹاﺅن اور مجھے کیوں نکالا تھا‘ سیاسی جماعتوں کو 17 جون کے خون شہادت نے اکٹھا کیا، اداروں کو مسمار نہیں ہونے دیں گے، نواز شریف چھانگامانگا کلچر کے بانی ہیں،یہ ہے آپ کا نظریہ،نواز شریف کاکردار کہاں سے جمہوری ہے۔ سانحہ ماڈل ٹاﺅن انکوائری رپورٹ پر متفقہ لائحہ عمل طے کرنے کے لیے پاکستان عوامی تحریک کے زیر اہتمام منہاج القرآن سیکریٹریٹ میں آل پارٹیز کانفرنس ہوئی۔ پیپلز پارٹی،تحریک انصاف ،عوامی مسلم لیگ ، مسلم لیگ ق ،جماعت اسلامی ،ایم کیوایم اور پی ایس پی اور مجلس وحدت مسلمین کے رہنماﺅں سمیت اپوزیشن قیادت نے شرکت کی۔ اپنے خطاب میں طاہر القادری نے کہانواز شریف نے جمہوریت کی جڑیں کاٹیں۔شریف برادران نے سیاست میں لوگوں کوخریدنے کا کلچر متعارف کرایا۔طاہر القادری کا کہنا تھامیں نے 2014 میں تحریک شروع کی پرامن تحریک جو شروع نہیں ہوئی تھی اسے خطرہ سمجھاگیاتحریک شروع نہیں ہوئی تھی کہ رات کو آپریشن شروع کردیا گیا ۔تجاوزات ہٹانے کے نام پر فورس کے ہزاروں ارکان کو بھیجا گیا ،آپ نے ماڈل ٹاﺅن میں خون کی ندیاں بہائیں۔شہیدوں کے خون نے پانامہ کی شکل میں نوازشریف کاچہرہ بے نقاب کیا۔ سانحہ ماڈل ٹاﺅن اب عوامی تحریک کا مقدمہ نہیں اس پر اب مشترکہ اعلان اور لائحہ عمل ہوگا۔ انہوں نے کہا سانحہ ماڈل ٹاﺅن اور مجھے کیوں نکالا آج کی صورت حال سے جڑے ہوئے ہیں۔شہباز شریف،رانا ثنا دیگر نہیں بچیں گے استعفیٰ دیں،سیاسی جماعتیں اداروں اورملک دشمنوں کے خلاف اکٹھی ہیں۔باہمی اختلافات کے باوجود سیاسی جماعتیں آج ایک چھت تلے جمع ہیں۔سیاسی جماعتوں کو انسانیت کے درد نے جمع کیا۔اے پی سی سے خطاب میں ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا1988 کے انتخابات میں غیر جمہوری ناخداﺅں کی سرپرستی میں الیکشن لڑا۔ نوا زشریف نے ضیا دورمیں ارکان اسمبلی کوکھلی رشوت دینے کا آغاز کیا۔سندھ ،کے پی، بلوچستان میں کیش دے کردھڑے خریدے گئے۔طاہر القادری نے کہا کہ شریف برادران کہتے ہیں اے پی سی میں شامل پارٹیاں کسی کا کندھا استعمال کررہی ہیں، وہ بتائیں کہ سعودی عرب میں کون کس کا کندھا استعمال کررہاہے۔انہو ں نے اے پی سی میں شریک سیاسی جماعتوں کے قائدین سے اظہارتشکرکیا اور کہا کہ اے پی سی میں 40سے زائد سیاسی جماعتوں نے شرکت کی۔طاہر القادری نے کہا نوازشریف کی جماعت اس وقت ملک دشمن بن گئی ہے، نوازشریف قانون کے آگے سرنڈر کریں،ہمارے ساتھ پوری قوم اور سیاسی جماعتوں کی طاقت ہے، نوازشریف نے پاکستان کو مقروض بنادیا ۔آپ نے افواج پاکستان کو گالیاں دیں، آپ سعودی عرب اپنے کرپشن کے سرمائے کو چھپانے کےلئے گئے نظریاتی لوگ بزدل نہیں ہوتے۔ آپ سعودی عرب مدد مانگنے گئے ہیں، نوازشریف صاحب آپ کی جماعت اس وقت ملک دشمن بن گئی ہے آپ نہیں بچ سکتے ۔ آپ کو اور آپ کی کابینہ کو جیل میں جانا ہوگا، ہم نے31 دسمبر کو ڈیڈ لائن دی ہے۔ آپ قانون کے آگے سرنڈر کریں آپ گرفتار ہوں گے۔اگر دھرنا ہوگا تو آپ کے اقتدار کو مرنا ہوگا۔ پاکستان پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر قمر الزمان کائرہ نے کہا پیپلز پارٹی کا وفد پاکستان عوامی تحریک کے زیراہتمام منعقد کی جانے والی آل پارٹیز کانفرنس میں موجودہ حکومت گرانے کے لئے نہیں کیا۔ حکومت اگر اپنے گناہوں سے گرتی ہے تو گرتی رہے، پارٹی کا وفد سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے شہداءکے ورثاءکو انصاف دلانے کے لئے ڈاکٹر طاہر القادری کی آل پارٹیز کانفرنس میں شریک ہوا۔ قمر زمان کائرہ نے کہا وزیراعلیٰ اور وزیر قانون پنجاب کو مستعفی ہونا چاہئے۔ باقر نجفی رپورٹ میں ذمہ داروں کی نشاندہی ہو چکی۔ سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے متاثرین کے ساتھ کھڑے ہیں۔ سربراہ پاک سرزمین پارٹی مصطفی مکال نے کہا جتنا مذاق ملک سے ہونا تھا ہو گیا‘ خمیازہ بھگت رہے ہیں‘ جن پر ظلم ہوا ان سے اظہار یکجہتی کے لئے آئے‘ کراچی پاکستان کا دل ہے‘ کراچی چلے گا تو پاکستان چلے گا۔ کراچی پر برسوں سے ”را“ کے ایجنڈ کا قبضہ تھا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ظالم نہیں کہلوانا چاہئے‘ باقر نجفی کی رپورٹ نے سب کھول دیا۔ نجفی رپورٹ کے مطابق ذمے داروں کو قانون کے حوالے کریں‘ جن پر ظلم ہوا‘ ان سے اظہار یکجہتی کیلئے آئے ہیں۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا عوامی مسلم لیگ حکمرانوں کے خلاف اپوزیشن کو سڑکوں پر آنے کا مشورہ دے گی‘ بہت صبر ہو چکا حکمران قانونی اخلاقی جواز کھو چکے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc