گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کے کئی اراکین کا سوشل میڈیا پر پاکستان کئی نامور مذہبی اور سیاسی رہنماوں کے خلاف مسلسل شرانگیزی ۔لیکن گرفتار صرف قومی حقوق کی بات کرنے والے عوام۔

گلگت ( خصوصی رپورٹ) گزشتہ دنوں گلگت میں گرفتار ہونے والے سوشل ایکٹویسٹ نثار حسنین رمل کے حوالے سے گلگت بلتستان پولیس کے ترجمان مبارک جان کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق سوشل میڈیا پر علماء کرام، سیاست دانوں اور سرکاری افسران کے خلاف اشتعال دلانے اور بغاوت کے زمرے میں آنے والے مسیجز پھیلانے کے الزام میں اُنہیں گرفتار کرکے اُن کے خلاف علی آباد تھانہ میں 124 اے، 125 اے، 153 اور انسداد دہشتگردی ایکٹ کے دفعہ 11 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ فرض کریں اگر یہ سب باتیں درست بھی ہے تو سوال یہ اُٹھتا ہے کہ کیا یہ قانون صرف عوام کیلئے ہے ؟ یا طاقتور طبقہ بھی قانون سے بالاتر نہیں۔ اگر نہیں تو اس وقت گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کے کئی اہم ممبران پاکستان کے کئی معتبر مذہبی اور سیاسی شخصیات کے خلاف سوشل میڈیا پر اشتعال انگیزی پھیلانے اور لوگوں کو براہ راست دھمکیاں دینے میں مصروف ہیں لیکن کوئی پوچھنے والا نہیں۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc