غیرقانونی ٹیکسز کے خلاف سخت سردی کے باوجود سکردو میں ہزاروں کی تعداد میں احتجاجی مظاہرہ اور علامتی دھرنا ۔ گو حفیظ گو فلک شگاف نعرے۔

سکردو (نمائندہ خصوصی) متنازعہ گلگت بلتستان پر غیر قانون ٹیکسز کے خلاف گلگت بلتستان بھر کی طرح سکردو میں مکمل شٹرڈاون ہڑتال اور عوامی جلسے کا انعقاد کیا گیا۔ تاریخ میں پہلی بار مقررین نے گلگت بلتستان کی متنازعہ حیثیت کے حوالے سے بین الاقوامی قوانین کے شقات اور دستور پاکستان میں گلگت بلتستان کی حیثیت پر عوام کو اگاہ کیا۔ مقررین نے گلگت بلتستان کی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا جو لوگ گلگت بلتستان کو این ایف سی ایوارڈ میں حق دلانے کی حیثیت نہیں رکھتے وہ کس قانون کے تحت گلگت بلتستان پر ٹیکس نافذ کرنے کی باتیں کرتے ہیں، مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ ٹیکس نافذ کرنے کیلئے ایک قانونی میکنزم چاہئے جس کیلئے دستور پاکستان موجود ہے لیکن بدقسمتی سے گلگت بلتستان دستور پاکستان دائرے سے باہر ہیں ایسے میں عوام کو بتایا جائے کہ وہ کونسا میکنزم ہے جس کے تحت ٹیکس کولیکشن کی تعریف کی جائے۔ مقررین نے کہا کہ پہلے گلگت بلتستان کی اسمبلی کو آئین سازی کا حق دیں عوام کو ٹیکس پر قانونی ساز کا مکمل اختیار دیں اس سے پہلے گلگت بلتستان کے چند افراد کی مراعات کیلئے گلگت بلتستان پر ٹیکس کسی بھی صورت منطور نہیں اگر حکومت نے ٹیکس ایڈاپٹشن 2012 کو کعلدم قرار دینے میں تاخیر کی تو گلگت کی طرف لانگ مارچ ہوگا جس کی تمام تر ذمہ داریاں مسلم لیگ نون کی حکومت پر عائد ہوگی۔ جلسے میں موجود عوام نے گو حفیظ گو کے فلک شگاف نعروں سے بلتستان کے سرد فضاوں کو گرما دیا۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc