رہنما عوامی ایکشن تحریک اور سوشل ایکٹوسٹ حسنین رمل حقوق گلگت بلتستان کیلئے آواز بلند کرنے کے جرم میں گرفتار۔

گلگت(نامہ نگار) ہنزہ سے تعلق رکھنے والے سوشل ایکٹوسٹ اور عوامی ایکشن تحریک کے سرگرم کارکن حسنین رمل کو سوشل میڈیا پر عوامی حقوق کے لئے آواز اٹھانے کے جرم میں دہشت گردی ایکٹ اور سوشل میڈیا ایکٹ کے تحت گرفتار کرلیا گیا۔ اُنکے خلاف اُن کی سوشل میڈیا کی ایکٹویٹیز کو جواز بنا کر ہنزہ میں ایف آئی آر درج کی ہوئی تھی اور آج ہنزہ پولیس نے اُنہیں گلگت سے گرفتار کرلیا۔ کہا یہ جارہا ہے کہ اس وقت جے آئی ٹی میں اُن سے تفتیش ہورہی ہے اور کل عدالتی ریمانڈ کیلئے پیش کیا جائے گا۔
افسوس کی بات ہے حکومت گلگت بلتستان ایک طرف اظہارے رائے کی آذادی کا ٖڈھنڈوار پیٹتے ہیں وہیں جب سے حفیظ الرحمن کی حکومت آئی ہے قومی حقوق کیلئے پراُمن احتجاج کرنے والوں کو بند گلی کی طرف دھکیلا جارہا ہے۔ حسنین رمل کا شمار اُن سوشل ایکٹوسٹ میں ہوتا ہے جو ہمیشہ دستور پاکستان اور اقوام متحدہ کے متفقہ قرادادوں کے مطابق گلگت بلتستان کے حقوق کا مطالبہ کرتے ہیں۔ انہوں نے اس جرم میں پہلے سرکاری نوکری کو کھویا اور آج اُنکی گرفتاری انسانی حقوق کے حوالے سے لمحہ فکریہ ہے۔ پاکستان میں انسانی حقوق کیلئے کام کرنے والوں کو چاہئے کہ گلگت بلتستان میں انسانی حقوق کی خلاف وزری کیخلاف ورزی پر آواز بلند کریں۔

About admin

2 comments

  1. اصف علی خان

    اقتدار سے پهلے سچے وعدے کرنے والے اج کها مفرود هے سابقہ هکومت کو گالیاں دینے والے آ ج خود گالیاں کها دهی هے سابقہ وزیر اعلی نے تو گاگت کے عوام کے ساته سوتلی ماں جیسا سلوک کر گیا اب بچا کچ تو هفیظ دهمان اس مهدی شاه کے مشن کو آگے بڈها رها هے هفیط نے تو مهدی شاه کا ریکارڈ بهی توڑ ڈالا اب کسی پر بهی بھروسہ نہ دها سب کے سب چور ڈاکو جمع هیے

  2. اصف علی خان

    اب هفیط رهمان صادق اور امین نه رهے

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc