ڈسٹرکٹ ہسپتال چلاس مسائلستان بن گیا دور دراز سے علاج معالجے کیلئے آنے والے مریض چلاس ہسپتال میں ڈاکٹروں کی عدم دستیابی اور سہولیات کی عدم فراہمی کی وجہ سے در بدر کی ٹھوکریں کھانے لگے۔

چلاس(خصوصی رپورٹ)ڈسٹرکٹ ہسپتال چلاس مسائلستان بن گیا دور دراز سے علاج معالجے کیلئے آنے والے مریض چلاس ہسپتال میں ڈاکٹروں کی عدم دستیابی اور سہولیات کی عدم فراہمی کی وجہ سے در بدر کی ٹھوکریں کھانے لگے۔ہسپتال میں صفائی کی ناقص صورت حال اور عملہ کی مریضوں کے ساتھ غیر اخلاقی رویہ نے عوام اور مریضوں کو ذہنی مریض بناکر رکھ دیا ہے ۔دیامر کے عوامی و سماجی حلقوں صدام حسین،مولنا محفوظ ،اکرام اللہ،محمد دین و دیگر نے کہا کہ چلاس ہسپتال کا کدا حافظ ہے ،ڈیوٹی پر معمور داکٹر وقت سے پہلے ہسپتال چھوڑ کر اپنی اپنی کلنکوں کی طرف نکل پڑتے ہیں جبکہ ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ اکثر ڈاکٹروں سے خالی رہتا ہے ہسپتال کا پورا نظام چند جونئیر سٹاف کے حوالے کرکے ڈاکٹرز اور دیگر ملازمین رفو چکر ہوتے ہیں مگر پوچھنے والا کوئی نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ کمشنر دیامر کو چلاس ہسپتال کی بگڑتی ہوئی صورت حال کا مکمل علم ہے لیکن داکٹروں کے سامنے وہ بھی بے بس نظر آرہے ہیں ،ہسپتال میں اندھیر نگری چوپٹ راج ہے ،مریض بے موت مررہے ہیں ،نظم درہم برہم ہے کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی اور چیف سیکرٹری فوری نوٹس لیکر چلاس ہسپتال کا نظام ٹھیک کروائیں ورنہ ڈاکٹروں کی بے حسی اور عملہ کی غفلت سے انسانی جانوں کی ضیائع کا اندیشہ ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc