آئینی حقوق کا سوال گول،برجیس طاہر نے گلگت بلتستان کے عوام کو شکی قرار دے دیا۔عوام کی اُمیدوں پر پانی پھیر گئے۔

سکردو( نامہ نگار) سکردو میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے جب مقامی صحافی نے وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان چودہدی برجیس طاہر سے گلگت بلتستان کی آئینی حقوق کا سوال کرتے ہوئے پوچھا کہ اخر کب تک گلگت بلتستان کے عوام بغیر کسی آئینی اور قانو نی شناخت کے قربان ہوتے رہے ہیں اس خطے کی مسلسل قربانیوں کا صلہ آئینی حقوق کی شکل میں کب گلگت بلتستان کے عوام کو نصیب ہوگی۔ اس سوال کو اُنہوں نے مکمل طور پر گول کر دیا اور اُلٹا کہنے لگے کہ آپ لوگ ہر چیز کو شک کی نگاہ سے دیکھتے ہیں ایسا نہیں ہونا چاہئے جس پر صحافی نے دوبارہ سوال کو دوہرایا تو کوئی جواب نہیں دیئے۔

عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ برجیس طاہر ایک طرح گلگت بلتستان کے اصل حاکم ہیں اور اُنکی طرف سے اہم سوال کو گول کرنے کا مطلب گلگت بلتستان کے عوام کے دیرنیہ خواب کی تکمیل ممکن نہیں ہے لہذا اب گلگت بلتستان کے عوام کو متنازعہ حیثیت کی بنیاد پر آذاد کشمیر طرز پر اُن سے بااختیار سیٹ اپ دینے کیلئے سیاسی اور قانونی طور پر مطالبہ کرنے کی ضرورت ہے۔ اور غیر قانونی ٹیکسز کو روکنے کیلئے پہلی فرصت میں گلگت بلتستان میں ریاست جموں کشمیر کے دیگر اکائیوں کی طرح سٹیٹ سبجیکٹ کی بحالی کیلئے کوششیں تیز کرنے کی ضرورت ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc