وومن ٹرفیکنگ کیس کے حوالے سے انسداد دہشتگری کی عدالت میں پیشی،عدالت میں ڈی ڈی اطلاعات فاروق احمد خان سے دو گھنٹے تک سوالات پوچھے گئے۔

گلگت(پی ٹی نیوز) منگل کے روز انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج راجہ شہباز خان وزیراطلاعات گلگت بلتستان اقبال حسن پر مبینہ سیکس سکینڈل کی خبر شائع کرنے پر محکمہ اطلاعات گلگت بلتستان کے ڈائریکٹر فاروق احمد کو وارنٹ کے ذریعے عدالت میں حاضر کرکے صحافی شبیر صہام کی خبر سے متعلق عدالت میں طلب کرکے مبینہ ملزم صحافی شبیر صہام کے خلاف گواہ بنے پر شبیر صہام کے وکیل ایڈووکیٹ منصور شہید خاور نے مختلف سوالات کئے۔ جس میں شبیر سہام سے ملاقات، وزیراطلاعات سے ملاقات، اسلام آباد جانے سمیت بعض لڑکیوں کو پہچانے سے متعلق بھی سوالات اٹھائے گئے۔ عدالت میں 2 گھنٹے زیادہ دیر تک ڈائریکٹر اطلاعات سے سوالات پوچھے گئے۔ جبکہ اقبال حسن کی جانب سے بنے والے دیگر گواہاں سے شبیرسہام کا وکیل بدھ کے روز ردعمل کے سوالات عدالت میں اٹھائینگے۔ منگل کے روزصحافی شبیر سہام کے وکیل نے عدالت میں ایک درخواست گزاری جس میں انہوں نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ وہ ڈیلی ٹائیمز اخبار میں شائع ہونے والی خبر پر وزیر اعلی گلگت بلتستان کے حکم پر فیکیٹ اینڈ فائینڈنگ کمیٹی تشکیل پائی تھی جس میں سکریٹری داخلہ سمیت کمیٹی میں شامل دیگر سرکاری اداروں کے زمہ داران کو عدالت میں پیش کرکے انکے بیانات قلمبند کرنے کی تحریری درخواست گزاری۔ انسداد دہشت گردی عدالت کے جج راجہ شہباز نے سماعت کیلئے منظور کرکے بدھ کی صبع درخواست قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے متعلق بحث کرنے کیلئے کہا۔ جس پر سپیشل پراسکیوٹر عبدالعظیم نے بحث کیلئے تیاری کرنے کی عدالت سے مہلت مانگ لی۔ عدالت نے وزیراطلاعات کے گواہوں سے شبیر صہام کے وکیل کے جوابی سوالات کے بعد وزیراعلی کے عدالت میں پیش ہونے یا نہ ہونے سے متعلق درخواست پر بحث ہوگی۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc