حکومت گلگت بلتستان موسم گرما میں سیاحوں کی آمد کے بعد سیاحتی مقامات سے کچرا ُٹھانے میں ناکام ماحولیاتی آلودگی اور بیماریاں پھوٹ پڑنے کا خدشہ۔

سکردو ( تحریر نیوز) سیاحت گلگت بلتستان کی معشیت کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں لیکن سیاحت کیلئے سہولیات نہ ہونا گلگت بلتستان میں ایک سنگین مسلہ ہے یہی وجہ ہے کہ گلگت بلتستان میں سیاحت کی فروغ کا مسلہ وسائل کی کمی اور حکومتی عدم توجہی کے ساتھ ساتھ محکمہ سیاحت میں من پسند افراد اور افسر شاہی کی وجہ سے سیاحت کے فوائد کم اور عوام کیلئے اس وجہ سے مسائل ذیادہ نظر آتا ہے۔ گلگت بلتستان میں محکمہ سیاحت آج بھی جہاں دور دراز علاقوں میں سیاحتی مواقع پیدا کرنے میں ناکام نظرآتا ہے وہیں بہت سے مقامات پر صفائی کا انتظام نہ ہونا ایک سنگین صورت حال اختیار کرچُکی ہے۔ پورے گلگت بلتستان کی سطح پر سیاحوں کی آمد اور جانے کے بعد سیاحوں کی جانب سے گندگی پھیلائے کا معاملہ فوری توجہ طلب ہے۔ اس سلسلے میں ای وی کے ٹو سی این آر گزشتہ کئی سالوں سے ماحولیاتی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ پہاڑوں اور گلیشرز کی صفائی کا عمل بھی سر انجام دے رہا ہے۔ ای وی کے ٹو سی این آر نے مونکلیر Monclear کے تعاون سے اس سال کے ٹو بیس کیمپ، غورو ۲، کنکورڈیا، بروڈ پیک، اور بلتورو گلیشیر پہ صفائی کی مہم چلائی۔ اس عمل میں 3650 کلو انسانی فضلہ ، 2000 ٰٰ کلو کچرا اکھٹا کیا گیا جو کہ جون سے ستمبر تک ۴ ماہ تک جاری رہا۔ انسانی فضلہ داس کیمپ کے قریب دفنایا گیا۔ اسی طرح کچرا اسکولی لایا گیا جس کی چھان کر کے جلانے کے قابل حصے کو وہاں پہ لگی جدید مشین incineratorمیں جلایا گیا جبکہ باقی کچرا مناسب طریقے سے تلف کیا گیا۔ سی کے این پی کے سٹاف بھی اس مہم میں شامل رہے۔ اس طرح کی صفائی مہم سے پاکستان اور اس کے پہاڑوں اور گلیشرز کے حوالے سے ایک عمدہ تاثر پوری دنیا کو ملتا ہے۔ ساتھ ہی ساتھ ماحول کی آلودگی سے بھی بچا جا سکتا ہے، ۔ خاص طور پر انہی گلیشرز سے بہتا ہوا پانی پیا اور استعمال کیا جاتا ہے۔
حکومت کو چاہئے کہ چند ایک مقامات کے بجائے پورے گلگت بلتستان کی سطح پر صفائی کیلئے مہم جوئی کریں اور جہاں جہاں ٹورسٹ پوائنٹ ہیں وہاں ماحولیاتی آلودگی کو روکنے کیلئے ہدایتی بورڈ آوایزاں کریں اگر حکومت نے اس طرف توجہ نہیں دیا تو گلگت بلتستان میں سیاحوں کی آمد پر جہاں غریب عوام کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوتے ہیں وہیں ناقص صفائی کے انتظامات کی وجہ سے کئی قسم کے بیماریاں پھوٹ پڑھنے کا خدشہ بھی ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc