ضلع کھرمنگ میں نون لیگ کے کارکنان کی جانب سے سوشل میڈیا کو کنٹرول کرنے کی کوشش۔

کھرمنگ(پ،ر) ضلع کھرمنگ میں اس وقت معاشرتی عدم برداشت عروج پر ہے،مختلف پارٹیوں کے کارکنان لسانی اور علاقائی بنیادوں پر سوشل ایشوز کو لیکر ایک دوسرے کیلئے محاذ کھولے نظر آتا ہے۔ سیاسی بحث کے دوران اکثر اوقات ذاتیات اور ایک دوسرے سے دشمنی مولنا معمول بن چکی ہے جو کہ ترقی پذیر معاشرے کیلئے بدشگونی کی علامت ہے۔ المیہ یہ ہے کہ ہر کوئی خود کو اچھا سمجھتے ہیں جو کہ علاقائی مفاد کے بنیاد پر نہیں بلکہ پارٹی وابستگیوں کی وجہ سے ہے۔ حکمران پارٹی کے کارکنان اس حوالے سے کچھ ذیادہ ہی معاشرے پر کنٹرول کرنے کے درپے ہیں یہی وجہ ہے کہ ان عناصر کو ہر بات علاقائی امن کیلئے خطرہ لگتا ہے۔ ایسا ہی ایک واقعہ گزشتہ دنوں پیش آیا جب مسلم لیگ نون کے کسی مقامی عہدے دار نے سیاسی تنقید کو ضلع کھرمنگ کی امن کیلئے خطرہ قرار دیکر پارٹی عہدے کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے ایک مقامی سوشل ایکٹوسٹ کے سوشل میڈیا پر سیاسی ایکٹیوٹیز کو علاقائی امن کیلئے خطرہ قرار دیکر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے پاس مسلم لیگ نون کے رہنما کی حیثیت سے باقاعدہ درخواست جمع کیا ہے۔ اس درخواست کی بنیاد پر جب حقائق جانچنے کی کوشش کی تو معلوم ہوا کہ ایک نوجوان سوشل ایکٹوسٹ نے حکمران جماعت کے خامیوں کو سوشل میڈیا کے ذریعے ایکسپوز کرنےکی کوشش کی تھی جو مقامی لیگی رہنماوں برداشت نہیں ہوئے اور لوکل عہدے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سوشل میڈیا پر کنٹرول کرنے اور عوام سے اظہار رائے کی آذادی چھیننے کی مذموم کوشش کی ہے۔
عوامی حلقوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اس قسم کے افراد جو تنظیمی عہدوں کا ناجائز فائدہ اُٹھا کر غیر سنجیدہ حرکات کرتے ہیں اُس پر نوٹس لیں تاکہ معاشرے میں حکمران جماعت کی ساکھ برقرار رہ سکے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc