ڈائریکٹر ایجوکیشن سکردو کارکردگی بہتر بنانے کے دعوے ڈھونگ ثابت ہوئی سرکاری سکولوں میں تعلیمی اصلاحات لانے کی بجائے محکمہ تعلیم آفس سکردو میں قابل سینئر اساتذہ سے کلرکل کام لیا جارہا ہے۔

سکردو( مہدی اکمل) ڈائریکٹر ایجوکیشن سکردو کارکردگی بہتر بنانے کے دعوے ڈھونگ ثابت ہوئی سرکاری سکولوں میں تعلیمی اصلاحات لانے کی بجائے محکمہ تعلیم آفس سکردو میں قابل سینئر استادوں سے کلرکل کام لیا جارہا ہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ کسی کلرک کو رکھنے کے بجائے 2 ای ایس ٹی ٹیچرز کو ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن اپنی آفس میں بطور پی اے تعینات کر رکھا ہے جس کے سبب کئی سکولوں کی کارکردگی بری طرح متاثر ہو رہا ہے سیاسی بنیادوں پر تجربہ کار ٹیچرز کو مختلف عہدے دے کر آفس میں بیٹھا رکھا ہے جو کہ تعلیم دشمن پالیسیوں کا تسلسل ہے ماضی میں بھی مذکورہ ادارہ کرپٹ مافیا کے نرغے میں رہی ہے اب بھی وہ اثرات موجود ہے ۔والدین کا کہنا ہے کہ قابل استادوں کو سکولوں سے نکال کر آفس میں بٹھائے رکھنا غریب بچوں سے زیادتی ہے ویسے بھی سرکاری سکولوں میں وہ بچے زیر تعلیم ہیں جو پرائیویٹ سکولوں میں بھاری فیس لینے کے سبب نہیں پڑھا سکتے ہیں سرکاری سکولوں کی کارکردگی حوصلہ افزا نہیں ہے سیکرٹری ایجوکیشن فوری نوٹس لے کر مذکورہ ٹیچرز کو واپس سکولوں میں بھیج دی جائے تاکہ قابل استادوں کی کمی پورا ہو سکے اور سرکاری ٹیچروں کے بچوں کو سرکاری سکولوں میں پڑھنے پر پابند بنایا جائے تاکہ سرکاری سکولوں کو اپنی بچوں کے خاطر بھی معیار تعلیم کو بہتر بنانے پر مجبور ہو بصورت دیگر والدین راست اقدام لینے پر مجبور ہونگے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc