واپڈا دیامر میں غیر قانونی بھرتیاں ہورہی ہیں، دیامر کے منتخب ممبران اسمبلی کی کال پر واپڈا کے اندر غیر قانونی بھرتیاں کا سلسلہ جاری ممبران اسمبلی اپنے رشتہ داروں کو بھرتی کرنے کیلئے واپڈا کے مالیشی پالیشی افسران کی اخبارات میں تعریفیں کررہے ہیں ۔ رہنما پی پی پی دیامر

چلاس(قادر حسین سے)پیپلز پارٹی دیامر کے جزل سیکرٹری سید امان بٹو نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ واپڈا دیامر میں غیر قانونی بھرتیاں ہورہی ہیں، دیامر کے منتخب ممبران اسمبلی کی کال پر واپڈا کے اندر غیر قانونی بھرتیاں کا سلسلہ جاری ممبران اسمبلی اپنے رشتہ داروں کو بھرتی کرنے کیلئے واپڈا کے مالیشی پالیشی افسران کی اخبارات میں تعریفیں کررہے ییں ۔انہوں نے کہا کہ جی ایم واپڈا متاثرین ڈیم کو نظر انداز کررہے ہیں اور متاثرین کو دیوار سے لگایا گیا ہے ۔انہوں نے کیا کہ واپڈا میں ہونے والی غیر قانونی بھرتیوں کی تحقیقات کی جائیں رشوت اور سفارش کے بل بوتے پر بھرتی ہونے والے مقامی اور غیر مقامی ملازمین کو ادارے سے فارغ کیا جائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ واپڈا حکام نے دیامر کے متاثرین کے ساتھ کئے گئے تمام معاہدوں پر کوئی عمل نہیں کیا ہے ، آئے روز غیر مقامی افراد بھرتی ہورہے ہیں جبکہ مقامی بے روز گار ہاتھ میں ڈگریاں لیئے در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ییں ۔انہوں نے کہا کہ واپڈا کی طرف سے دیامر کے نالہ جات میں 5 کلومیٹر تک بننے والی سڑک پر ناقص میٹریل کا استعمال کیا جارہا ہے ،کوئی پوچھنے والا نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ چلاس کی تمام سڑکیں کھنڈرات کا منظر پیش کررہی ہیں واپڈا نے چلاس شہر کی کی تعمیر و ترقی کیلئے ابھی تک کوئی اقدامات نہیں اُٹھایا ہے ، جو کہ لمحہ فکریہ ہے ۔انہوں نے کیا کہ واپڈا میں کرپشن کا بازار گرم ہے ۔چلاس کے تمام اداروں کے سربراہان چلاس کی دولت سمیٹ کر راتوں رات کروڑ پتی بن رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ چلاس میں عوام پر ظلم کی انتہا ہورہی ہے ، مگر منتخب ممبران اسمبلی انہیں افسران کی تعرفیں اور اپنے رشتہ داروں کو نوازنے کیلئے بیوروکریسی کی بوٹ پالش کررہے ہیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ ہر کرپٹ آفسر کو کرپشن کرنے کیلئے چلاس بھیج دیا جاتا ہے ۔چلاس میں محکمہ صحت، محکمہ پانی و بجلی کی ناقص انتظامات کی وجہ سے عوام بے موت مررہے ہیں ۔چلاس ہسپتال میں ڈاکٹرز نہیں ہے شہر میں بسنے والے لوگوں کو پانی اور بجلی نہیں مل رہا، عوام پریشان ہیں اور موجودہ ممبران اسمبلی کو ووٹ دے کر پچھتارہے ہیں ۔چیف سیکرٹری نوٹس لیکر نظام کو درست کریں ورنہ عوام احتجاج پر مجبور ہونگے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc