سر زمین بے آئین گلگت بلتستان کے عوام پر ٹیکس عائد کرنا عالمی قوانین کی نفی ہے لہذا وفاقی حکومت سوچ سمجھ کر فیصلے کریں۔ سید طہٰ الموسوی خطیب جامع مسجد چھورکاہ شگر

شگر( نامہ نگار)علمائے امامیہ شگر کے صدر سید طہٰ الموسوی شمس دین نے کہا ہے کہ سر زمین بے آئین گلگت بلتستان کے عوام پر ٹیکس عائد کرنا عالمی قوانین کی نفی ہے لہذا وفاقی حکومت سوچ سمجھ کر فیصلے کریں جامع مسجد صاحب الزمان چھورکاہ شگر میں نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کونسل نے آپنے آقاوں کی ہاں میں ہاں ملا کر گلگت بلتستان میں ٹیکس نافذ کرنے کی جو غلطی کی ہے اور گلگت بلتستان کے غیور عوام اس غلطی کو کھبی تسلیم نہیں کریں گے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت گلگت بلتستان کو آئینی حقوق دینے کو تیار نہیں ہے لیکن گلگت بلتستان کے عوام کا خون چوسنا انہیں بہت پسند ہے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت گلگت بلتستان کو آئینی صوبہ بنانے کے لئے تیار نہیں ہے تو ٹیکس دینے کے لئے گلگت بلتستان کے عوام کس طرح تیار ہوں گے انہوں نے کہا کہ ہمیں افسوس اس بات پر ہیں کہ کونسل میں بیٹھے گلگت بلتستان کے نمائندوں کو بھی اس حوالے سے زرہ برابر فکر نہیں ہے کہ وفاق کے حکم کی عدولی کروں ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن ٹیکس پیپلز پارٹی کی جانب سے لگانے کا شوشہ چھوڑ رہے ہیں اگر پیپلز پارٹی نے لگایا ہے تو انہوں نے کونسا اچھا کام کیا جس کو آپ برقرار رکھیں آپ کی وفاق اور صوبے دونوں میں حکومت ہیں اسی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ٹیکس کو واپس لینے کے لئے اقدامات کریں ان کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی نے اپنی دور حکومت میں جو من مانیاں کی تھی جس کی سزا انہیں انتخابات میں ملی ہے اگر مسلم لیگ ن بھی پیپلز پارٹی کی نقش قدم پر چلیں تو اس سے بھی عبرت ناک سز ا مسلم لیگ ن کو بھی ملیں گے نماز جمعہ میں ٹیکس کے خلاف قراردار منظور کرلی گئی ۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc