ترجمان دفتر خارجہ نے گلگت بلتستان کے سیاسی قیدیوں کے بارئے میں لاعلمی اظہار کرتے ہوئے تفصیلات طلب کرلی.

اسلام آباد (فدا حسین سنیئر صحافی) ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے گلگت بلتستان کے سیاسی قیدیوں کے بارئے میں لاعلمی اظہار کرتے ہوئے انہیں انصاف دینے کے قانونی تقاضے پورے کرنے کے لئے گلگت بلتستان کے صحافیوں سے تفصیلات دینے کی درخواست کی۔جمعرات کو اسلام آباد میں وزارت خارجہ کے ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں ترجمان سے پوچھا گیا کہ اگر پاکستان میں تخربی کاروائی کا اعتراف کرنے والے بھارتی جاسوش کلبھوشن یادیوو کو انصاف دینے کے لئے خصوصی انتظامات ہو سکتے ہیں تو بابا جان سمیت عمر قید کی سزا کاٹنے والے گلگت بلتستان کے سیاسی قیدیوں کو انصاف فراہم کرنے کے لئے کوئی راستہ کیوں نہیں نکالا جا سکتا تو اس سوال پر عائشہ فارقی نے کہا اگر ان سیاسی قیدیوں کے تفصیلات دی جائیں تو انہیں انصاف دینے کے قانونی تقاضوں پر غور کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے چین میں پھسے ہوئے گلگت بلتستان کے طالب علموں کی واپسی کے سلسلے میں ہونے والی ممکنہ پیش رفت کے سوال پر کہنا تھا کہ اس حوالے سے معاملات پر غور جاری ہے۔ تاہم انہوں نے خنجراب باڈر کے ذریعے سے آنے کی اجازت دینے کے سوال پر کوئی جواب نہیں کیا۔ یاد رہے 15 جولائی کو چین میں پھسے ہوئے گلگت بلتستان کے 30 طالب علموں کی فہرست اور خنجراب باڈر سے واپس آنے کی اجازت دلوانے کی ان کی درخواست اور ان کا رابطہ نمبر سمیت تمام تفصیلات وزارت خارجہ تک پہنچائی گئی ہیں۔
بریفنگ کے دوران عائشہ فارقی نے کلوبھوشن کو تیسری دفعہ قونصلر رسائی دینے کی پیشکش کرنے کی تصدیق کی۔ انہوں نے 20 جولائی کی تاریخ گزرنے کے بعد کلبھوشن کی طرف قانونی نمائندہ مقرر کرنے درخواست کے قانونی حیثیت کے بارے میں تبصرہ کرنے سے انکار کرتے ہوئے وزارت قانون انصاف سے رابطہ کرنے کی تجویز دی۔ اس سے پہلے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی جانب سے بھارت کو جذبہ خیر شگالی کے طور پر کلبھوشن کی اس کے والد سے ملاقات کرانے کی پیشکش کی گئی تھی مگر بھارت نے ابھی تک اس حوالے سے جواب نہیں دیا ہے۔ انہوں نے افغان رہنماعبداللہ عبداللہ کو دورے پاکستان کی دعوت دینے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ امید ہے جلد جزئیات طے ہونے کے بعد ان کے دورے کی تفصیلات جاری کی جائیں گی۔ لیبیا میں جاری کشیدگی کے سوال پر ترجمان نے کہا کہ پاکستان لیبا کی قومی سالمیت اور خودمختاری کے حامی ہیں اور مسئلے کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے کی حمایت کرتے ہیں۔ ترجمان نے امریکہ چین تعلقات میں تناؤ پر تبصرہ کرنے سے گریز کیا۔

About TNN-GB

2 comments

  1. سید صداقت علی شاہ

    گلگت بلتستان پہ کسی بھی سیاسی جماعت کی احسان نہیں بلکہ اسی دھرتی کے فرزندوں یعنی ہمارے اباءواجداد کے ھم پہ بہت بڑی احسانات ھے مگر افسوس ہم نعرے دوسروں کے لگاتے ہیں۔ بدقسمتی سے ان کے بعد اس حسین خطے میں ایسا کوئی سیاسی لیڈر بھی نہیں جو حقیقی معنوں میں عوام کی ترجمانی کرے ۔کچھ وفاقی جماعتوں کے اگے سر جھکا لیے تو چند اک وفاقی ایجسیوں کےاگے سیلنڈر کی ھے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc