ملک محمد مسکین ایک عہد ساز شخصیت

گلگت بلتستان کے معروف سیاستدان و قبائیلی سردار سابق سپیکر گلگت بلتستان اسمبلی ملک محمد مسکین کرونا وائرس کے باعث گلگت میں انتقال کر گئے۔ملک محمد مسکین کی عمر 85برس تھی۔مرحوم کو آج ان کے آبائی گاوں تانگیر میں سپرد خاک کیا جائیگا۔ملک محمد مسکین گزشتہ دو ہفتوں سے علیل تھے اور گلگت سٹی ہسپتال میں زیر علاج تھے۔منگل کے روز ان کی طبعیت مزید بگڑ گئی اور وہ اپنے خالق حقیقی سے جا ملے ۔ملک محمد مسکین کی رحلت کی خبر دیامر میں جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی اور پورے خطے کی فضا سوگوار رہی۔ملک محمد مسکین کی جسد خاکی گلگت سے تانگیر پہنچا دیا گیا ہے جہاں ہزاروں سوگواروں اور چاہنے والوں کی موجودگی میں انکو آج آبائی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا جائیگا۔ملک محمد مسکین نے سوگواروں میں چار بیٹے اور ایک بیوہ چھوڑی ہیں۔ملک محمد مسکین
دیامر کا معتبر حوالہ، علاقے کی موثر آواز، مقامی روایات کا امین اور گلگت بلتستان کا اثاثہ تھے۔ملک محمد مسکین کی 6عشروں پر محیط سیاسی سفر کا آج اختتام ہوگیا۔وہ 1970سے 2020تک سیاست سے وابستہ رہے اور مختلف ادوار میں 7مرتبہ علاقے کی عوام کی خدمت کا موقع ملا۔ملک محمد مسکین نے 30دسمبر 1970کو گلگت بلتستان کی مشاورتی کونسل کے اولین انتخابات میں حصہ لیا اور داریل تانگیر سے ممبر منتخب ہوگئے۔6نومبر 1975کو ناردرن کونسل کے ماتحت انتخابات ہوئے اور مشاورتی کونسل کا نام تبدیل کرکے ناردرن ایریاز کونسل رکھا گیا ان انتخابات میں بھی داریل تانگیر سے ملک محمد مسکین ممبر منتخب ہوئے۔11اکتوبر 1977کو ہونے والے انتخابات میں بھی تیسری مرتبہ داریل تانگیر سے ملک محمد مسکین ممبر منتخب ہوگئے۔26اکتوبر1983کو چوتھے انتخابات ہوئے جس میں بھی ملک محمد مسکین داریل تانگیر سے ممبر منتخب ہوگئے -گلگت بلتستان کے جماعتی بنیادوں پر ہونے والے نویں انتخابات 12اکتوبر 2004کو تانگیر سے ملک مسکین نے الیکشن جیت کر ممبر بن گئے اور اسمبلی کے سپیکر کے عہدے پر بھی فائض رہے۔ملک محمد مسکین نے صوبہ خیبر پختونخواہ کا ضلع کوہستان سے بھی الیکشن میں حصہ لیا تھا۔
ملک محمد مسکین ایک کامیاب سیاستدان کیساتھ ایک بہترین مشران (جرگہ دار)بھی رہا اور گلگت بلتستان میں امن کی بحالی کیلئے ان کا کردار مثالی رہا ہے۔ملک مسکین ایک قومی لیڈر تھے ان کا خلا صدیوں پر نہیں ہوگا۔ملک محمد مسکین کے وفات پر گلگت بلتستان کے تمام مکاتب فکر کے لوگوں اور سیاسی و سماجی حلقوں نے گہرے دکھ اور رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی بلند درجات کیلئے دعائیں کی ہے۔

تحریر :
عمرفاروق فاروقی

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc