ضلع کھرمنگ منٹھوکھا ندی میں شدید طغیانی طوفان کا امکان، کاشتکاروں کا ڈی سی کھرمنگ بڑا مطالبہ۔

کھرمنگ (ٹی این این) گلگت بلتستان بھر کی طرح اس سال ضلع کھرمنگ کے ندی نالوں میں شدید طغیانی طوفان کا شدید امکان ہے۔ دیگر نالہ جات کی طرح منٹھوکھا ندی کا شمار ان ندیوں میں ہوتا جہاں ہر سال پانی کے شدید بہاؤ کی وجہ سے کاشتکاروں کے سال بھر کی محنت ندی کے بے رحم موجوں کا شکار ہوتے ہیں۔
مقامی کاشتکاروں کے مطابق اس ندی پر پانی کے کٹاؤ کو روکنے کیلئے گزشتہ دہائیوں سے سیاسی اثرورسوخ اور سفارش اور کمیشن کی بنیاد سرکاری اورنجی اداروں سے ایک اندازے کے مطابق ایک کروڑ سے زائد رقم عوامی نمائندوں کے منظور نظر افراد ہڑپ کر چکے ہیں لیکن اس ندی کے طغیانی طوفان کو روکنے کیلئے منظم طریقے سے واٹر شیڈ (بند ) لگانے میں ناکام رہے۔ ندی اطراف کے کاشتکاروں کا کہنا تھا کہ کھرمنگ ضلع بننے کے بعد بھی اس ندی کے اطراف کاشتکاروں کے زرعی کھیتوں اور پھلدار اور غیر پھلدار درختوں کو بچانے کیلئے حکومتی سطح پر کچھ نہیں کیا گیا بلکہ صرف ضلعی انتظامیہ کے آگے واہ واہ کرنے والے افراد کو نوازا جارہا ہے۔انکا کہنا تھا کہ دریا سندھ کے کنارے سے لیکر اوپر آپشار تک اطراف واٹر شیڈ (بند) لگایا تو نہ صرف علاقے کی خوبصورتی میں اضافہ ہو سکتا بلکہ زراعت اور سیاحت کے کثیر مواقع پیدا ہوسکتاہے ۔کاشتکاروں کا مزید کہنا تھا کہ ہم ہر سال اپنی مدد آپ کے تحت محنت کرکے ندی کے کناروں جو زراعت کیلئے آباد کرتے ہیں لیکن حکومت کی جانب سے عدم توجہی کے سبب گرمیوں کے موسم میں سال بھر کا محنت پانی کا نذر ہو جاتا ہے ۔انہوں نے ڈپٹی کمشنر کھرمنگ سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کے ساتھ تعاون کریں اور پانی کی کٹائی کو روکنے کیلئے ہنگامی بنیادوں فنڈز ریلیز کرائیں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc