لوک داستان رگیالفو کیسر کی اثرات تصویر کے آئینے میں ۔اور زیر نظر تصویر سے اخر کیا روایات ہے ۔ قسط نمبر پانچ

کیسار اور اس کی نشانات بلتستان کی وادیوں میں بکھری ہوئی ہیں ، ماضی قریب تک ایسے لوگ موجود تھے جن کو یہ طویل رزمیہ داستان زبانی یاد تھی ، اس نثری کہانی میں کہیں کہیں رزمیہ نظمیں بھی ہیں جن کو وہ بزرگ لحن سے گا کر سنایا کرتے ، داستان کیسر بلتستان بھر کی مشہور لوک کہانی ہے؛ کہانی کا مرکزی ہیرو ڑگیالفو کیسر ایک مہم جو اوربہادر شہسوار ہے اور سلطنت کی توسیع کے لیے آس پاس کے ملکوں پر حملے کرتے رہتے ہیں جن میں اس کے ساتھ ماورای طاقتیں اسے فتح یاب کرا دیتے ہیں۔ اس بادشاہ کی مہم جوی کی داستان چین اور نیپال میں بھی کافی مشہور ہے تاہم بلتستان میں یہ نثر میں جبکہ ان ملکوں میں نظم اور مصوری میں ہے بلتستان بھر میں اس بادشاہ سے منسوب نشانیا ں موجود ہیں جن میں اس کا گھوڑا؛ اصطبل؛تیر؛ تھال اور دیگر چیزیں ہیں۔ یہ پتھریلی دروازہ غندوس کھرمنگ میں نالہ گنگچھے میں ہے جو کیسری ستاغو یعنی کیسر کا مین گیٹ کہلاتا ہے ۔ اسی دروازے پراس کے تیروں کے نشان بھی ہیں جن۔کو مقامی بچے تھوکنا ضروری سمجھتے ہیں۔ گیٹ کے اوپر جو پتھر رکھا ہوا یہ جنات کے علاوہ انسانی ہاتھ سے ممکن نہیں لگتا۔
تحریر ۔ممتاز ناروی

لوک داستان کیسر تصویر کے آئینے میں سیریز کی قسط نمبر پانچ ہے

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc