مسلم لیگ ن کے اہم مرکزی رہنما نے پارٹی صدر اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حفیظ الرحمٰن پر سنگین الزام لگا دیا۔

گلگت (ٹی این این) ڈپٹی اسپیکر گلگت بلتستان اسمبلی جعفر اللہ خان نے پارٹی صدر اور وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن پر سنگین الزام لگا دیا۔ تفصیلات کے مطابق گلگت کے مقامی ویب چینل کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ن کے صدر اور وزیر اعلی حافظ حفیظ الرحمٰن اکثر فیصلوں میں ان سمیت پارٹی کے دیگر ممبران اسمبلی کو شریک نہیں کرتے۔ اُنہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے حفیط الرحمن کابینہ اور پارلیمانی کمیٹیوں سے بھی مشاورت نہیں کرتے بلکہ وہ اپنے منظور نظر ایک دو مشیر اور انتظامیہ سے مشاورت سے کرتے ہیں۔یاد رہے سوشل میڈیا پر عوامی حلقوں کی جانب سے وزیر اعلیٰ ہر ہمیشہ یہی الزام لگاتے رہے ہیں کہ وزیر اعلیٰ فیصلے اپنی مرضی سے تعصب اور ذاتی مفادات کی بنیاد پر کرتے ہیں اس وجہ سے گلگت بلتستان کے کئی علاقے انکی حکومت کو پانچ سال کا عرصہ گزر جانے کے بعد پانی اور بجلی جیسے بنیادی سہولیات سے محروم ہیں وہیں میگا پراجیکٹس ملی بھگت سے کرپشن اور کک بیک لینے اور رشتہ داروں کے نام کر پاکستان کے مختلف شہروں اور گلگت میں کروڑوں کی پراپرٹی بنانے کا الزام بھی لگتے رہے ہیں۔ اب ان ہی کی پارٹی کے اہم رہنما اور ڈپٹی اسپیکر گلگت بلتستان اسمبلی جعفر اللہ خان کا ان پر الزام ان پر لگانے کے بعد سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے اُن پر لگنے والے تمام الزامات درست ہونے اور قومی احتساب بیور و کو اُن کے خلاف انکوائری کرنے کا مطالبہ کرنا شروع کردیا ہے۔ ان پاکستان کے ایک نجی ٹی وی پر ایک صحافی نے کرپشن کے سنگین الزام لگائے تھے لیکن آج تک اُنہوں اس صحافی کے خلاف کوئی قانونی چارہ جوئی نہیں کی.

About TNN-GB

One comment

  1. جعفراللہ نے اس سے پہلے کیوں الزام نہیں لگایا۔پانچ سال تک مزے لوٹتے رہے اب عوام کے سامنے ایک نیاڈرامہ رچایا

Leave a Reply to عاطف Cancel reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc