وزیر اعلیٰ کے حلقے میں غیر قانونی طریقے سے جنگلات کی کٹائی کے اصل ذمہ دار کون ہے حقیقت سامنے آگئی۔

گلگت ( تحریر نیوز) گلگت حلقہ نمبر دو تحصیل جگلوٹ کے علاقے گاشو میں جنگلات کی بے دریغ کٹائی کی کچھ تصویریں سوشل میڈیا پہ وائرل ہوئی تو بہت سارے درد دل رکھنے والوں نے جنگلات کی کٹائی کا سارا الزام محکمہ جنگلات کے ذمہ داروں پر ڈال کر مسلے کے ذمہ داران کا آپنی دانست میں تعین کردیا۔ لیکن باوثوق ذرائع کے مطابق اصل صورتحال کچھ اور ہے۔ مسلم لیگ کی مقامی حکومت کرپشن کرنے تکنیکی مہارت سے مالا مال ہے اور جب اس طرح کا بڑا کرپشن وزیر اعلیٰ کے حلقے میں ہورہا تو کسی کی مجال نہیں کہ اُن سے پوچھ گچھ کریں۔ یاد رہے عمارتی لکڑی کی آہمیت اور اسکی قدر و قیمت سونے کے برابر ہے اور وزیراعلی کے حلقے کا یہ گاؤں گاشو جنگلات کی نعمت سے مالا مال ہے۔ ذرائع کے مطابق ٹمبر مافیا کے کچھ سرکردہ ممبران نے حلقے کا نمائندہ جووزیراعلی بھی ہے کی پشت پناہی کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی کوشش کی ہے اورحفیظ الرحمن نے ٹمبر مافیا کے خلاف محکمہ جنگلات کے ذمہ داروں کو خاموشی رہنے کا حکم دیا ہوا ہے کیونکہ ٹمبر مافیا اور حفیظ الرحمن کا گٹھ جوڑ اور کاروباری پارٹنر شپ ہے۔

افسوس کی بات یہ ہے کہ حفیظ الرحمن نہ صرف گاشو کے جنگلات کا قتل عام کروا رہا ہے بلکہ حراموش کے جنگلات کے قتل عام میں ٹمبر مافیا کے ساتھ ملوث ہے اور دیگر سرکاری ٹھیکوں کی طرح یہاں سے بھی باقاعدہ وصولی کرتے ہیں۔

چیف سکرٹیری کو چاہئے کہ اس معاملے کی تحقیقات کیلئے خصوصی کمیٹی بنائیں تاکہ دودھ کا دوھ اور پانی کا پانی ہو جائے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc