بلتستان میں کرونا ٹیسٹنگ لیب نہ بنانے کے پیچھے کون ہے؟ ایم ڈبلیو ایم بلتستان نے پول کھول دیا

سکردو (پ ر) مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ احمد علی نوری نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس وقت دنیا سمیت وطن عزیز پاکستان اور گلگت بلتستان کے عوام کرونا جیسی موذی بیماری کے خلاف حالت جنگ میں ہے۔اس چیلنج سے نمٹنے کے لیے عوام اداروں اور زمہ داروں کو تمام تر اختلاف اور ذاتی پسند ناپسند چھوڑ کر انسانی بنیادوں پر اس کی تدارک کے لئے جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے اور یہ وقت سیاسی پوائنٹ اسکورنگ اور علاقائیت کو ہوا دینے کا نہیں بلکہ متحد اور پرعزم ہو کر آگے بڑھنے کا ہے لیکن نہایت افسوس کا مقام ہے کہ گلگت بلتستان کی صوبائی حکومت پرانی ڈگر پر چل رہی ہے اور بلتستان ریجن کو محروم رکھنے میں کو کسر باقی نہیں رکھی ہے۔اس وقت گلگت بلتستان میں سب سے زیادہ کرونا کے کیسسز بلتستان سے ہیں لیکن ہمسایہ دوست ملک چین سے ملنے والی امداد میں بھی نا انصافی کی گئی۔صوبائی حکومت کو یہ روش ترک کرنی ہوگی۔ امدادی سامان انسانی،اخلاقی اور ضرورت کی بنیاد پر تقسیم ہونے کی بجائے جو ناانصافی ہوئی ہے اس کا فوری ازالہ ہونا چائیے، اس عمل کی وجہ سے بلتستان ریجن کے عوام میں شدید تشویش پائی جاتی ہے۔ شیخ احمد علی نوری نے مزید کہا کہ پورے بلتستان ریجن میں کرونا ٹیسٹینگ لیبارٹری نہ ہونا صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ ہم صوبائی حکومت اور ریاستی اداروں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اولین فرصت میں ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو میں لیب قائم کیا جائے تاکہ موجودہ ہنگامی صورتحال میں مریضوں کی تشخیص اور علاج ممکن ہو۔

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc