طاقت کے آگے قانون بے بس،مشہ بروم کمپنی کا بس بغیر کسی لائٹ کے 47 مسافرین کو لیکر سکردو پہنچ گئے۔

سکردو(ٹی این این) گزشتہ دنوں روندو میں المناک حادثے کے بعد گلگت بلتستان میں غیر معیاری بسوں اور غیرقانونی ٹرانسپورٹ کمپنیوں کے خلاف حکومت کی جانب سے سخت کاروائیاں کی جارہی ہے۔ اس سلسلے میں بلتستان ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے معیار پر نہ اُترنے کمیشن پر بغیر کسی روٹ پرمٹ اور فٹنس سرٹفکیٹ کے گاڑیاں چلانے والے کئی نجی کمپنیوں پر پابندی عائد کرکے دفاتر سیل کردی ہے لیکن دوسری طرف مشہ بروم کمپنی کے خلاف کسی قسم کا کوئی نوٹس لینے والا نہیں یہی وجہ ہے کہ گزشتہ روز مشہ بروم کمپنی کا ایک بس بی ایل این 9295  47 مسافروں کو لیکر بغیر کسی لائٹ کے دو دنوں کی سفر کے بعد جب سکردو پونچا توکچوار چیک پوسٹ پر پولیس اور محکمہ ٹیکسیشن نے مشہ بروم کے بس کو روک کر چیک کیا تو مسافرین پھٹ پڑے اور بتایا کہ اس بس کو بغیر کسی لائٹ کے بری مشکل سے یہاں تک پونچایا ہے۔پولیس چیکنگ کے بعد یہ بھی معلوم ہوا کہ مذکورہ بس کا فٹنس سرٹفیکٹ بھی ایک سال پہلے ختم ہوچُکی تھی۔ مسافرین کے مطابق مذکورہ بس میں لائٹ بشام سے بند ہوگیا تھا اور ڈرائیور نے کسی قسم کی پرواہ کئے بغیر آگے چلنے والے کسی گاڑی کی لائٹ کے سہارے پر پوری رات سفر کیا ۔پولیس نے بس چلانے والے ڈرائیور کر گرفتار کرلیا۔یاد رہے مشہ بروم ٹرانسپورٹ سروس کمپنی کا مالک گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی میں اسپیکر حاجی فدا محمد ناشاد ہیں اور آج سے چند ماہ پہلے بھی لولو سر کے مقام گٹی داس پر بغیر کسی روٹ پرمٹ اور فٹنس سرٹفیکٹ کے سفر کرنے کی وجہ سے حادثے کا شکار ہوگیا جس میں دو درجن سے زائد افراد جاں بحق ہوئے تھے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc