گلگت بلتستان کی حیثیت میں کوئی تبدیلی نہیں کی جاری ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ

اسلام آباد(ٹی این این)ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے جمعرات کو اسلام آباد میں ہفتہ وار بریفنگ میں صحافی کے سوال پر گلگت بلتستان کے ضلع غذر اور خیبر پختونخواہ کے علاقے کوہستان کے درمیاں ہندارپ نامی نالے پر حدود تنازعے کے حل کے لئے منعقد ہونے والے جرگے کے بارئے میں لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے جہاں اس پر تبصرہ کرنے سے انکارکردیا۔ سنئیر صحافی فداحسین کے ایک سوال پر انہوں مزید نے کہا کہ گلگت بلتستان کی حیثیت میں کوئی تبدیلی نہیں کی جاری ہے۔ یاد رہے گلگت بلتستان کے مختلف سیاسی سماجی رہنماوں اور قانونی ماہرین نے کوہستان اور گلگت بلتستان کے درمیان سرحدی تنازعے پرجرگے کو گلگت بلتستان کے عدالتی نظام پر عدم اعتماد کا منہ بولتا ثبوت قرار دیاہے۔اُنکا کہنا تھاپاکستان اور ہندوستان کے درمیان کراچی ملٹری اگریمنٹ کے تحت اقوام متحدہ کی موجودگی میں ریاست جموں کشمیر کے سرحدیں متعین ہے جسکی کوہستان سے خلاف ورزی ہوئی ہے اور اس خطے کے سرحدوں اور اراضی علاقوں پر قبضہ عالمی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ لہذا قانونی طور پر اُن کے خلاف بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کا مقدمہ درج ہونا چاہئے۔دوسری طرف آج گلگت بلتستان اسمبلی نے ایک بار پھر گلگت بلتستان کو آئینی اسمبلی بنانے کیلئے متفقہ قرارداد منظور کی ہے ایسے موقع پر دفتر خارجہ کا گلگت بلتستان کے حوالے سے بیان انتہائی اہم ہے اورگلگت بلتستان اسمبلی کے ممبران کی ناسمجھی اور سیاسی طور پر نابالغی کو ظاہر کرتی ہے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc