لوک داستان رگیالفو کیسر تصویر کے آئینے میں اور زیر نظر تصویر ہے کیا؟ اور کیا روایات ہے تفصیلات کیلئے لنک کلک کریں ۔قسط نمبر 4

کیسر داستان بلتی اساطیر میں ایک اہم سینہ بہ سینہ دستاویز کی حیثیت رکھتا ہے.اس داستان کی مختلف زبانوں میں ، علاقوں میں کچھ کمی بیشی کے ساتھ ایک سا مافوق الفطرت کردار کیسر ہی ہیرو ہے…تبت، سینٹرل ایشیا، چین اور بلتستان اس داستان کی سر زمین ہے.اس داستان میں خور یل کے بادشاہ کیسر کی بیوی ہلنو بڑوکمو کو فاتح قوموں کی دستور کے مطابق لونڈی بناکر خور یل لے جاتا ہے ، اپنی وفادار اور خوبصورت بیوی کو خوریل کے بادشاہ کی قید سے چھڑانے کے لیے کیسر بھیس بدل کے خور یل کا سفر کرتا ہے ، پھر ایک خفیہ منصوبے کے تحت اس بادشاہ پہ حملہ کرتا ہے جس میں اس کے تین پھوپھیاں جو مافوق الفطرت اور ان دیکھی طاقتوں کے حامل ہوتی ہیں ،جن کا نام الی کرمان بتایا جاتا کیسر کا بھرپور ساتھ دیتی ہیں ،ان طاقتوں کے بل بوتے پر کیسر بالآخر خوریل کے بادشاہ کو قتل کردیتا ہے ، اس بہادر بادشاہ کیسر کے آثار بلتستان بھر میں موجود ہیں ، کھرمنگ غندوس میں کیسری ستاغو (کیسر کا دروازہ) کیسری مرزن ( کیسر کا مقامی کھانا) کیسری ٹھالو ( کیسر کا آٹا گوندھنے والا برتن) اسی طرح سکردو کے مضافات میں نرو نامی گاؤں میں کیسر کا گھوڑا،اصطبل، خیمہ وغیرہ موجود ہیں ،قیاس یہی کیا جاتا ہے کہ کیسر اسی گھاٹی میں روپوش ہوا ۔

زیر نظر تصویر ضلع کھرمنگ کے موضع غندوس میں شہ کرلسہ کے مقام پہ موجود ہے جسے کیساری مرزن یعنی کیسار بادشاہ کا روایتی کھانا کہلاتا ہے ، مرزن ایک مقامی کھانا ہے جو بک ویٹ یا جو کے آٹےکو حلوا کی طرح پکاتے ہیں پھر اسے تھالی پہ نکال کے اس کے درمیان کٹورے جیسا گڑھے بنا کر اسے خالص دیسی مکھن پگھلا کے بھر دیتے ہیں ، کچھ کچھ علاقوں میں شہتوت کا رس جسے مقامی زبان میں خندہ کہلاتا ہے ملا دیتے ہیں ، کہیں کہیں مکھن میں چینی بھی ملا دیتے ہیں ،تصویر میں آپ غور سے دیکھیں تو مکھن کے کٹورے کے گرد انگلیوں کے نشان تک واضح دکھائی دیتے ہیں جس سے لقمے بنائے ہوں گے ،

 

 

تحریر :ممتاز ناروی

 

 

 

داستان کیسر کی اثرات پر تحریر نیوز نیٹ ورک کی خصوصی سیریز کی قسط نمبر چار

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc