صرف ایک ہی شہر سے سالانہ نوے ہزار ٹن خوبانی ایکسپورٹ

مالاتیا ترکی صوبے مالاتیا کا ضلع اور کیپیٹل سٹی ہے۔یہ پہاڑوں میں گھرا ہوا علاقہ ہے۔اور ترکی کے خوبانی کا کیپیٹل بھی یہی ضلع ہے۔

 

ترکی کے ضلع مالاتیا سے اس سال کے پہلے مہینے، جنوری میں 9 ہزار ٹن خوبانی برآمد کی گئی ہے۔

 

ترکی کے کُل 17 لاکھ خوبانی کے درختوں میں سے 8 لاکھ ضلع مالاتیا میں ہیں اور خوبانی یہاں کے 50 ہزار کے قریب کنبوں کا ذریعہ روزگار ہے۔

 

مالاتیا کی خوبانی ضلع آنتیپ کے باکلاوا اور ضلع آئیدن کی انجیر کے بعد جغرافیائی حوالے سے یورپی یونین میں رجسٹرڈ شدہ تیسری اہم چیز ہے۔

 

یہاں کی خوبانی کو گذشتہ سال 110 ممالک کو برآمد کیا گیا تھااور موجودہ سیزن میں 25 کروڑ 35 لاکھ ڈالر زرمبادلہ کے ساتھ 99 ہزار 666 ٹن خشک خوبانی بیرونی ممالک کے ہاتھ فروخت کی گئی ہے۔

 

رواں ماہِ جنوری میں 9 ہزار ٹن خوبانی کی برآمد سے 25.5 لاکھ ڈالر زرمبادلہ حاصل کیا گیا ہے سال 2019 کے اسی مہینے میں برآمدات کی مقدار 700 ٹن اور زرمبادلہ کی مقدار 5.5 ملین ڈالر تھی۔

پاکستان کے شمالی علاقوں بلخصوص گلگت بلتستان میں کل خوبانی کی پیداوار 70000 میٹرک ٹن ہے۔ مگر یہاں صحت مندانہ طور پر سکھانے اور اسکی پروسیسنگ کے بلکل مواقع موجود نہیں۔اس سیکٹر میں پرائیویٹ انویسٹمنٹ بھی زیرو سمجھو۔

اتنے شاندار مواقع سے سرمایہ دار استفادہ کریں تو اپنی انویسٹمنٹ بھر پور منافع کے ساتھ واپس لانے کے ساتھ ملک کو کثیر زر مبادلہ بھی میسر ہوگی۔ گلگت بلتستان کے اس لال سونے کو ضائع ہونے سے بچانے کے لئے حکومتی سطح پر بھی اہم اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔ اگر بطور ملک ہم نے ترقی کرنی ہے تو سب سے پہلے اپنے قدرتی وسائل کی بے دردانہ ضیاع کو روکنا ہوگا۔اس سے دیہی آبادی میں خوشحالی بھی آئیگی اور ڈالر بھی۔

وزیر اعظم پاکستان کے مشیران خاص سے گزارش ہے کہ اس اہم شعبے کی ترقی کے لئے ترجیحی بنیادوں پر پالیسیز اور فنڈز مہیا کئے جائیں، پرائیویٹ سیکٹر کو بھی یہاں کام کرنے کے لئے مراعات دئے جائیں۔ ایکسپورٹ کوالٹی پروسیسنگ مشینریز کی حوصلہ افزائی کیا جائے۔

 

 

تحریر جی ایم ثاقب

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc