ضلع شگر کے موضع تسر واقع میں نادرا آفس بند ،اہل علاقہ سخت مشکلات سے دوچار۔

شگر(ٹی این این)تسر میں نادرا آفس کی سردیوں کیلئے کی جانے والے عارضی چھٹی پر عمائدین کا خدشہ کہی یہ مستقل چھٹی میںتبدیل نہ ہوجائے۔تسر باشہ کے عوام کو شناختی کارڈ اور فارم ب بنانے میں مشکلات کاسامناہے۔تسر باشہ کے عمائدین اور عوام الناس نے ڈاائریکٹر جنرل نادرا اسلام آباد ، ڈپٹی ڈائریکٹر نادرا گلگت بلتستان ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر گلگت ریجن اوراسسٹنٹ ڈائریکٹر بلتستان ریجن سے آفس کو دوبارہ بحال کرنے کا مطالبہ کردیا۔تسر میں گذشتہ سال لوگوں کی سہولیات کیلئے نادرا نے سنٹر کا آغاز کیا تھا جسے موسم سرما میںسردی کے سبب تین ماہ کے لئے بند کردیا گیا ہے جس سے عوام کومشکلات پیش آرہی ہے۔شناختی کارڈ اور فارم “ب* بنانے کیلئے خواتیں، معذور افراد اور عمر رسیدہ خواتین و حضرات کو اس یخ بستہ موسم میں تین تین گھنٹے کا مسافت طے کرکے شگر سنٹر جانا پڑرہا ہے اور ٹائم پہ گاڑیاں نہ ملنے کی وجہ سے رات شگر سنٹر میں گزارنا پڑتا ہے جھاں مناسب رہائشی نظام بھی میسر نہیں۔۔۔یہ تو سراسر ذیادتی ہے کہ 50روپے کا فارم “ب” بنوانے کیلئے غریب عوام کو ہزاروں روپے خرچ کرنے پر مجبور کریں۔علاؤہ ازیں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے وظیفہ لینے والے خواتین بھی نالاں ہیں کہ اکثر benificiaries کے انگوٹھے کا نشان درست نہ ہونے کی وجہ سے انہیں نادرا آفس جانا پڑتا ہے اور دو ہزار روپے جو ملتی وہ شگر اور سکردو میں انگوٹھا درستگی کے پیچھے ختم ہوتا ہے کچھ خواتین کا یہاں تک کہنا تھاکہ 2000روپے کی خاطر انہیں ذلیل و خوار ہونا پڑتا ہے جو کسی صورت قابل قبول نہیں۔ اہلیان و عمائدین تسر ،باشہ *نادرا کے اعلیٰ حکام* سے مطالبہ کیا ہے کہ نادرا آفس تسرکو جلد از جلد عوام الناس کے لیے کھول دیا جائے تاکہ عوام کے مسائل انکی گھر کے دہلیز پر حل ہو۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc