وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن کی مسلسل بلتستان کش پالیساں، گلگت سے علحیدگی کیلئے عوامی تحریک کاخدشہ۔

سکردو(ٹی این این)مسلم لیگ ن کی حکومت میں سکردو سے اہم اداروں کو ختم کرکے مسلسل گلگت منتقل کیا جارہا ہے۔ مگر بلتستان کے منتخب عوامی نمائندوںاور اراکین گلگت بلتستان کونسل کو ٹھیکوں اور گلی کوچوں کی سیاست سے فرصت نہیں مل رہا۔ شہریوں کی جانب سے شکوہ کیا جارہا ہے کہ منتخب نمائندوں کو جس مقصد کے لئے چنا گیا ہے تھا اس پر پورا نہیں اتر رہا اور وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن بلتستان میں موجود تمام اہم اداروں کو گلگت منتقل کر رہا ہے۔ ٹی این این عوامی سروے ٹیم سے خصوصی گفتگو میں سکردو کے شہری حفیظ الرحمن کی جانب سے بلتستان کے ساتھ زیادتیوں اور علاقے سے دشمنی پر پھٹ پڑے۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ شہر کے مختلف یوٹیلیٹی سٹورز روز مرہ استعمال ہونے والی اشیاء خورد نوش سے خالی ہوگیا ہے جس کے باعث خریدار چکر کاٹ کر واپس چلے جاتے ہیں یوٹیلیٹی سٹورز میں تعینات سیلزمین تسلی بخش جواب نہیں دے رہا۔ کل پرسوں کا بہانہ بنا کر گاہکوں کو ٹال کر جان چھڑا رہا ہے۔ٹی این این کی ٹیم نے سکردو شہر کے مختلف یوٹیلیٹی سٹورز کا رخ کر کے تفصیلات جاننے کی کوشش کی گئی تو مختلف سٹورز پر موجود سیلز مین کی مختلف آراء سامنے آیا اور جبکہ بلتستان میں یوٹیلٹی سٹور خالی ہونے کی اصل وجہ گزشتہ سال دسمبر میں سکردو میں موجود گودام کو بند کرکے گلگت منتقل کرلیا ہے جس کی وجہ بحران نظر آہا رہا ہے گودام بند ہو جانے سے عوام کو بھی وزیر اعظم ریلیف پیکیج بھی نہیں مل رہا ہے۔ بلتستان میں 19 یوٹیلٹی سٹور بند ہوچکا ہے اور اب ٹوٹل 13 یوٹیلیٹی سٹورز بھی مکمل بند ہونے کا خطرہ ہے جس کے باعث ناصرف عوام کو رعایتی نرخوں میں ملنے والی اشیاء ضرورت محروم ہونگے بلکہ یوٹیلیٹی سٹورز میں کام کرنے والے ملازمین کی بڑی تعداد بیروزگار ہونے کا خدشہ بھی ہے۔یوٹیلٹی سٹور میں سامان کی عدم دستیابی سے پریشان شہریوں نے الزام لگایا ہے کہ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کا بلتستان کےساتھ دشمنی کھل کرسامنے آہا رہا ہے اگر اس طرح کی ناقابل برداشت عمل جاری رکھا جائے تو نہ صرف مسلم لیگ ن کو مشکلات ہوگا بلکہ بلتستان میں گلگت سے علحیدگی کیلئے تحریک شروع ہوسکتا ہے۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ ظلم جب حد سے بڑھ جائے تو بغاوت کے راستے ہموار ہوتے ہیں لیکن حکمرانوں کو گلگت اور بلتستان کے درمیان تعصبات کے بجائے میرٹ اور آبادی کی بنیاد پر فیصلے ہونا چاہئے۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc