جنرل قاسم سلیمانی عالم اسلام کا ہیرو

امریکہ عراق،شام،یمن،فلسطین اور مشرق وسطیٰ میں امریکی اہداف کی راہ میں رکاوٹ اور ان کی ناکامی کا سبب بننے والے جنرل قاسم سلیمانی کو راستے سے ہٹانے کا پلان بہت قبل بنا چکا تھا۔امریکہ کیلئے یہ ناگزیر تھا کہ وہ سلیمانی کو راستے سے ہٹائیں تاکہ مشرق وسطیٰ میں اپنے قدم مضبوطی سے گاڑے۔قاسم سلیمانی سپاہ پاسداران انقلاب القدس فور س کے کمانڈر تھے۔مگر امریکہ کو اس بات کا علم نہیں کہ قاسم سلیمانی نے اب امریکہ واسرائیل کو اس قابل نہیں رکھا کہ وہ مشرق وسطیٰ میں موثر او ر آزادانہ اقدامات کرسکیں۔امریکہ نے اپنے اس مشن کی تکمیل جمعرات اور جمعہ کی رات بغداد ایئر پورٹ پرسید مقاومت قاسم سلیمانی کو شہید کرکے کیا،قاسم سلیمانی پاسداران انقلاب قدوس فورس کے سربراہ کی شہادت کے بعد ایران اور امریکہ جنگ کے دھانے پر ہیں،دنیا بھر میں جنگ عظیم سوئم کے خطرات منڈلا رہے ہیں۔قاسم سلیمانی کی شہادت پر شام،عراق،ایران،حزب اللہ اور حماس کا شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔ایران کے سپریم لیڈر سید علی خامنہ ای،ایرانی صدر حسن روحانی،وزیر خارجہ جود ظریف اور پاسدارن انقلاب کے جنرل نے واضح کردیا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کا بدلہ لیا جائے گا اور انتقام کیلئے امریکہ منتظر رہے۔ایران نے امریکہ کو واضح پیغام میں کہا ہے امریکا جنگ کا آغاز کرچکے ہے،اب اختتام ایران کرے گا،ایران اپنی مرضی سے جب اور جہاں چاہے گا اس کا سخت جوا ب دے گا،یہی وجہ ہے کہ امریکہ و اسرائیل نے سیکیورٹی ایمرجنسی نافذ کردی ہے او رفوری طور پر اپنے شہریوں کو عراق چھوڑنے کا حکم دیا ہے،دوسری طرف امریکہ نے ایران کو یہ آفر بھی دی ہے کہ ایران امریکی تنصیبات پر حملہ نہ کرے توامریکہ ایران پر سے پابندیوں کو ہٹایے گاجبکہ ایران نے اس آفر کو ٹھکر اتے ہوئے کہاہے ایران اپنے موقف پر قائم ہے،قاسم سلیمانی کی شہادت کا بدلہ سخت ہوگا۔سید حسن نصراللہ کا بھی واضح پیغام،سید سلیمانی کے خون کے ہر قطرے کا حساب لیں گے۔اگرچہ اس سے پہلے امریکہ نے شام،عراق اور ایران کی کئی شخصیات کو نشانہ بنایا مگر حالات اس نہج پر نہیں پہنچے مگر قاسم سلیمانی کی شہادت پر مشرق وسطیٰ میں بپا ہلچل سے آپ قاسم سلیمانی کی شخصیت کااندازہ لگا سکتے ہیں۔سید قاسم سلیمانی ایران میں رہبر معظم سید علی خامنہ ای کے بعد طاقتور ترین شخصیت تھے۔آپ دنیا کے وہ پہلے جنرل تھے جنہیں بڑے معرکے سر کرنے کا اعزاز حاصل تھااور آپ کا دامن جنگی کامیابیاں سے پرُہے،انتہائی خدا پرست اور توکل کے کمال درجہ پر فائز تھے۔سرد جنگ میں آپ کی مہارت سے دنیا خوفزدہ تھیں۔جنرل قاسم سلیمانی ایک غریب گھرانے میں پیدا ہوئے۔پاسداران انقلاب میں شمولیت اختیا رکرلی، عراق اور ایران جنگ 1980-1988میں آپ نے وہ کلیدی کردار آدا کیا جس کا اعتراف کرتے ہوئے آپ کو سینئر کمانڈر کاعہدہ تفویض کیا گیا۔1998میں آپ قدوس فورس کے کمانڈر منتخب ہوئے۔جنرل سلیمان کا ایران،عراق،شام،یمن،بحرین،حزب اللہ لبنان اور فلسطین میں کردار مجاہدانہ تھا،حماس کو اسرائیل کے خلاف طاقتور بنانے اور حزب اللہ کو ناقابل تسخیر قوت بنانے میں آپ کی عملی کاوشیں ہیں۔آپ کی سب سے بڑی کامیابی 2006 میں حزب اللہ کے ہاتھوں اسرائیل کی شکست تھیں،اسرائیل جو اس سے قبل کئی عرب ممالک کیلئے ناقابل شکست قوت بن چکا تھا،دنیا اسلام اسرائیل سے خوفزدہ تھا۔لبنان کی شیعہ ملیشیا کے ہاتھوں وہ عبرت ناک شکست ان کا مقدر بنیں کہ ان کا غرور خاک میں مل گیا اور حزب اللہ کی اس فتح کے پیچھے آپ کی جنگی اسٹریجی تھیں،آپ نے اپنی زندگی کے پہلے او ر آخری انٹرویو میں اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ حزب اللہ واسرائیل کی جنگ میں ہم نے چند ہی لمحوں میں وہ تمام مقامات تبدیل کیے جوہمیں اندازہ تھا کہ یہاں اسرائیل ٹارگٹ کرسکتا ہے اور ایسا ہی ہوا اسرائیل کے سارے حملے ضائع ہوگے،لیکن ہماری پالیسی واضح تھیں،ہمارا ہر نشانہ خطاء نہیں کرجاتا تھا،اسرائیل کی شکست واضح تھی خاص کر اس وقت اسرائیل کو لبنان چھوڑنا پڑا اور گھٹنے ٹیکنے پڑے جب سید حسن نصراللہ نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ الحمداللہ اب آپ دیکھئے اسرائیل کے جدید بحری بیڑے کو تباہ ہوتے ہوئے،حسن نصراللہ تقریر کے دوران یہ جملے آاداکررہے تھے، اسرائیل بحری بیڑے جو ڈیفنس سسٹم سے لیس تھا،ہماری راکٹوں کے نشانے پر آیا اور غارت ہوگیا۔یہی وہ مرحلہ تھا جب اسرائیل نے لبنان سے بھاگنے میں اپنی آفیت جانیں۔جنرل قاسم سلیمانی کو سرد جنگ کا بھی ماہر سمجھا جاتا تھا،جنرل قاسم سلیمانی نے 2011میں شام میں ہونے والی خانہ جنگی اور صدرکا بشارالااسد کی حکومت کے خلاف بغاوت کو ناکام بنایا،امریکہ واسرائیل کا شام وعراق میں بچھایا گیا فتنہ داعش کو نیست و نابود کرنے کی بھی اسٹریجی آپ نے ہی بنایا تھا،جنرل قاسم کی خاص بات یہ تھیں کہ آپ کو موت کی کوئی پرواہ نہیں تھیں یہی وجہ تھیں کہ آپ محاذ میں دشمن کے عین سامنے جاکر مجاہدوں کی رہنمائی فرمایا کرتے تھے۔2013 میں سی آئی اے کے سابق اہلکار جان میگوائر نے امریکی جریدے دی نیویار کرکو انٹرویو میں بتا یا کہ قاسم سلیمانی مشرق وسطیٰ کا سب سے طاقتور شخص ہے۔عراق میں اٹھنے والی حالیہ شرپسند سرگرمیوں کو کنٹرول کرنے میں بھی عراقی حکومت کی معاونت کیں۔امریکہ واسرائیل کے عراق و شام اور مشرق وسطیٰ میں اہم اہداف کے حصول کو ناکام بنایا۔امریکہ واسرائیل،برطانیہ،فرانس اور جرمنی سمیت عرب ممالک کی پیداوار اور عصر کا سب سے بڑادہشتگردگروہ داعش کو ناکام بنانے کا بھی سہرا آپ کے سر ہے،امریکہ شام وعراق میں قبضہ جما کر ایران اور حزب اللہ کے خلاف اقدامات کرنے کی اسرائیلی پالیسی پر عمل پیرا تھا اور اس عمل کو پائیہ تکمیل تک پہنچانے میں عرب ممالک خاص کر سعودی عرب،عرب عمارت نے مالی وزمینی اور سفارتی مدد کیں،لیکن انہیں کیا معلوم کہ فتح نصرت کی بشارت صرف مومنین کیلئے ہوتی ہے۔جنرل قاسم سلیمانی کو مشرق وسطیٰ کی سب سے طاقتور ترین شخصیت کہا جائے تو غلط نہ ہوگا،کیونکہ یہ آپ ہی ہیں کہ افغانستان میں داعش کو ڈی پورٹ کرنے کے امریکی مشن کو ناکام بنایا اور افغان طالبان کوداعش کیخلاف معاونت فراہم کیں،فلسطین کی آزادی اورا لقدس میں نماز کا قیام بھی آپ کی امنگوں میں شامل تھا،یہی وجہ رہی کہ آپ حماس مزاحمتی تنظیم کے براہ راست مددگار رہے،ہر مشکل وقت میں حماس کو اپنی ماہرانہ اور فاتحانہ پالیسوں سے مستفید کیا اور انہیں ہر میدان میں مدد کی،حماس کے رہنما آپ کی رہنما ہر مشکل مرحلے میں ضروری سمجھتے تھے۔پاکستان سے محبت کا عنصر یہ تھا کہ آپ نے فرمایا کہ میں پاکستان کیلئے اپنی جان قربان کرنے کو باعث افتخار سمجھتا ہوں۔پاکستان پر حملے کے تین ممالک کے منصوبے کو سے بھی پاکستان کو آگاہ کیا۔ آپ نے صہیونیت کے ہر مشن کو ناکام بنایا یہی وجہ تھی کہ امریکہ اور اسرائیل آپ کو لے کر پریشان تھے۔ ٹرمپ کے الفاظ امریکہ کی شدید پریشانی ظاہر کرنے کیلئے کافی ہیں۔ٹرمپ نے میڈیا سے گفتگو میں کہا قاسم سلیمانی کو مارنے کے بعد سکھ کا سانس لیا،سکون کرپائینگے اور قاسم کی دہشت ختم ہوگی،مگرامریکہ کی بے چینی سے لگتا ہے کہ امریکہ میں قاسم کی شہادت کے بعد بے چینی میں مزید اضافہ ہوا ہے،یہی وجہ ہے کہ امریکی کانگریس اور دیگر کئی سماجی وسیاسی شخصیات نے ایران کے شدید ردعمل کا ذمہ دار ٹرمپ کو قرار دیا ہے،وائٹ ہاوس کے اس دہشتگردانہ فعل کی مذمت کی،وائٹ ہاوس کے سامنے عراق کے حق میں مظاہرے بھی اس بات کی دلیل ہیں کہ امریکہ اب مزید طاقت کا بے جا استعمال کے قابل نہیں رہے گا۔سعودی عرب امریکہ سے زیادہ خوش اس بات پر ہے کہ بقول شاعر ہیں مثل یہودی یہ سعودی بھی عذاب،سعودیہ کے یمن میں بکھیرے حالات بحرین،شام وعراق اور نائیجریا میں سعودیہ اب خود کو سنبھالنے کی پوزیشن میں بھی نہیں۔قاسم سلیمانی کی شہادت عالم اسلام کا نقصان ہے کیونکہ آپ کی پالیسوں سے عالم اسلام او ر اسلامی دنیا تحفظ میں تھیں۔ایران امریکہ کشید ہ حالات میں امریکہ کا پاکستان کی طرف فوری جھکاو ئ اور امریکہ کے دیگر ممالک سے فوری رابطے اس بات کا غماز ہیں کہ امریکہ کس قدر خوفزدہ ہے،ایسے میں پاکستان اگر امریکی اقدامات کو جارحانہ قرار دے کر ایران کی حمایت نہیں کرسکتا تو امریکہ کا بھی الائنس نہ بنیں بصورت دیگر پاکستان کے حالات ابتر ہونگے۔مضبوط پاکستان اور مستحکم ایران ایک دوسرے کے مفاد میں ہیں۔امریکہ کا اگر ایک ہدف ایران ہے تو دوسرا پاکستان،اسلامی دنیا کی دو بڑی فوجی قوتوں سے دنیائے صہیونیت پریشان ہے ایسے میں پاکستان اور مسلم امہ کے وسیع تر مفادات کو مد نظر رکھ کر حکومت پاکستان کو مسلم امہ اور برادر اسلامی ملک کے مفاد کو عزیز تر رکھنا چاہیے۔

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc