محکمہ زراعت اور محکمہ جنگلات ہماری غیر آباد زمینوں کو آباد کرنے کے لئے خصوصی منصوبہ بندی کریں، ایسا کرنے میں کامیاب ہو جائے تو حکومت پر بیروزگاری کا بوجھ کم ہو سکتا ہے، نگرکے عوامی حلقوں کا مطالبہ

نگر ( اقبال راجوا) پانی ،زمین اور افرادی قوت موجود لیکن محکمہ زراعت اور محکمہ جنگلات ہماری غیر آباد زمینوں کو آباد کرنے کے لئے خصوصی منصوبہ بندی کرے، اگر حکومت ایسا کرنے میں کامیاب ہو جائے تو حکومت پر بیروزگاری کا بوجھ کم ہو سکتا ہے، نگر میں عوامی حلقوں کا مطالبہ، ہمارئے آباو اجداد نے جو زمینیں زیر کاشت لائی ہیں ہمارا دارو مدار بھی آج تک انہی زمینوں پر ہے، محکمہء زراعت اور محکمہ ء جنگلات کے لئے ضلع نگر کے ہزارووں ایکڑ صدیوں سے غیر آباد اراضیات کھلا چیلینج ہیں،پانی ،زمین اورعوام موجود لیکن عوام کے پاس منصوبہ بندی کے لئے سرمایہ نہ ہونے کے سبب ان اراضیات کو زیر کاشت آج تک نہیں لایا جا سکا، محکمہ زراعت ان غیر آباد قیمتی زمینوں کو آباد کرنے کے لئے ٹھوس منصوبہ بندی کرنے کے بجائے میدانی اور آباد شدہ نشیبی علاقوں کی اراضیات کو عوام سے اونے پونے داموں خرید کر چھوٹی چھوٹی نر سریاں قائم کر کے اپنا وقت گزار رہی ہیں۔ ضلع نگر قدرتی وسائل کے اعتبار سے بہت زیادہ امیر ضلع ہے لیکن عوام کے پاس ٹھوس اور جدید طریقوں سے زراعت سے فائدہ اٹھانے کے منصوبے یا تجربہ نہ ہونے کے سبب ان زمینوں کو زیر کاشت نہیں لا سکتی ہے۔ حکومتی ادارے بھی عوام سے ملکر اس جانب توجہ دیں تو علاقے میں سر تا پا گرین بیلٹ میں اضافہ اور قابل کاشت زمینوں میں قیمتی فصلیں اگاکر اپنی معیشت میں بہتری پیدا کر سکتی ہے۔محکمہ زراعت اور جنگلات اپنے دفاتر میں نئی زمینوں کی آباد کاری اور سبز پٹی کے اضافے کے لئے ٹھوس منصوبہ کرنے سے قاصر کیوں ہے اس سوال کا جواب عوام کے پاس نہیں ہے۔ مذکورہ محکموں سے عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ قابل آباد مگر تاحال ان غیر آباد علاقوں جن میں لوئی دار،بوئینگ،لنگ،نساء پور،قرقن داس،ہریسپو داس،بائیس،راکاپوشی داس،ڈونگ داس اور ہسپر ہوروکی نہایت قیمتی کے لئے ٹھوس محکمانہ منصوبہ بندی کی جائے ، تاکہ آبادی میں اضافے کے ساتھ عوام کی زمینیں کم ہونے کی پریشانی بھی ختم ہو جائے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc