محکمہ ایجوکیشن شگر کے اوے کا وے ہی بگڑا ہوا ہے۔،سکولوں میں تعلیم کی صورتحال انتہائی خراب ہے۔ قابل اساتذہ کو محکمہ تعلیمات عامہ کے آفس میں ڈیوٹی لگا رکھا ہے جبکہ نائب ناظمات تعلیم شگر کی دفتر کیلئے ابھی تک کوئی پوسٹ منظور نہ ہوسکا ہے۔ حکومت شگر کیساتھ تعصبانہ رویہ ختم کردیں ۔رہنما ایم ڈبلیو ایم

شگر(پ ر) مجلس وحدت المسلمین شگر کے رہنماء محمد ظہیر عباس نے کہا ہے کہ محکمہ ایجوکیشن شگر کے اوے کا وے ہی بگڑا ہوا ہے۔ سکولوں میں تعلیم کی صورتحال انتہائی خراب ہے۔ سکولوں سے قابل اساتذہ کو محکمہ تعلیمات عامہ کے آفس میں ڈیوٹی لگا رکھا ہے ۔جبکہ نائب ناظمات تعلیم شگر کی دفتر کیلئے ابھی تک کوئی پوسٹ منظور نہ ہوسکا ہے۔ جس کی وجہ سے قابل اساتذہ دفتری ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا ہے شگر کے سکولوں میں اساتذۃ کی کمی کی وجہ سے تعلیم کی صورتحال انتہائی خراب ہے۔ نااہل افراد محکمہ تعلیم شگر کے اعلیٰ عہدوں پر فائز ہے۔ جبکہ قابل اساتذہ دفتری ڈیوٹی انجام دینے میں مصروف ہیں۔سائنس پڑھانے والے اساتذہ اے ڈی آئی بنا کر رہی سہی کسر بھی پورا کردیا ہے۔ جس کی وجہ سے شگر میں اساتذہ کا شدید بحران پیدا ہوگیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت اور وزارت تعلیم گلگت بلتستان کی جانب سے ضلع شگر کو نظر انداز کیا جارہا ہے۔ اور شگر کیساتھ خصوصی طور تعصب کیا جارہا ہے۔ایک جانب شگر کو اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ہے تو دوسری جانب ایک سازش کے تحت شگر کے قابل اساتذہ کو تدریسی امور سے ہٹا کر دیگر امور میں مصروف رکھا جارہا ہے۔تاکہ شگر میں تعلیم کی صورتحال کو مزید تباہ کردیا جائے۔ انہوں نے کہا ہے کہ فوری طور قابل اساتذہ کو دفتری امور سے ہٹا کر تدریسی امور پر واپس لایا جائے۔ یا ان کی جگہ پر مزید اساتذہ تعینات کیا جائے۔انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ محکمہ تعلیمات عامہ گلگت بلتستان اور صوبائی حکومت شگر کیساتھ تعصبانہ رویہ ختم کردیں اور محکمہ تعلیم شگر کو مکمل طور پر فعال بنایا جائے۔ ورنہ عوام کی صبر کا پیمانہ لبریز ہوجائے گا۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc