راولپنڈی روٹ پر چلنے والے بسوں کی فٹنس کا معاملہ،محکمہ ایکسائز کے عہدیدار نے اہم انکشاف کردیا۔

گلگت(ٹی این این) مشہ بروم بس حادثے میں دو درجن سے زائد افراد کی ہلاکت اور زخمی ہونے کے بعد گلگت بلتستان سے راولپنڈی کیلئے چلنے والے بسوں کی فٹنس پر عوامی حلقوں کی جانب سے سوال اُٹھا یا جارہا ہے۔ اس حوالے سے جہاں مشہ بروم کے مالکان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کیلئے عوام کی جانب سے بہت ذیادہ مطالبہ کیا جارہا ہے وہیںمحکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی کارکردگی میں بھی سوال اُٹھا رہا ہے ۔ عوامی حلقوں کا الزام ہے کہ محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے اہلکار رشوت کے عوض بغیر کسی چیکنگ کے زائد میعاد گاڑیوں کو فٹنس سرٹفکیٹ جاری کرتے ہیں۔
اس حوالےمحکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن گلگت بلتستان کے اہم عہدے دار نے ہمارے نمائندے سے بات کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ ادارے کے ٹیکنکل اسٹاف نے چند روز قبل جانچ پڑتال کے بعد نیٹکو سمیت نجی کمپنیوں کی متعدد بسوں کو ان فٹ قرار دیکر انکو اپنی تحویل میں لیا تھا مگر بعدازاں سیاسی مداخلت پر تمام بسوں کو ریلیز کردیا۔ اُنکا کہنا تھا کہ اس وقت بھی ٹرانسپورٹ مافیہ نے محکمہ ایکسائز کے فرض شناس افسروں کیخلاف محاز کھول رکھا ہے لیکن کوئی تعاون کرنے والا نہیں کیونکہ ٹرانسپورٹ مافیا حکومت میں اہم عہدوں پر فائز ہیں۔

 

About TNN-GB

One comment

  1. بہت اچھا اقدام ھے ناشاد کو اب بس چلانے کا کوئی حق نہیں ظلم کی انتھا کر دی ۔پرانی بس اور کرایہ نامناسب اور عھدے کا ناجائز استعمال یہ سب منہ بولتا ثبوت ھے کہ اب ناشاد سمیت اسکی کمپنی بھی بند ھونی چاھیے ۔اور پوری کمپنی میں نئی بسس اور قابل ڈرائیور کی ضرورت ھے ۔اور بس مافیا میں ملوث تمام افراد کو سزا ملنی چاھیے

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc