گلگت بلتستان کے نجی اور سرکاری تعلیمی اداروں میں آج بھی طلبہ طالبات کیلئے بیت الخلاء کی سہولت موجود نہیں، محکمہ تعلیم نے اس حوالے سے آنکھیں بند کی ہوئی ہے۔

گلگت( تحریر نیوز) موجودہ حکومت کی جناب سے گلگت بلتستان میں تعلیمی انقلاب کے دعوے اپنی جگہ لیکن حقیقت یہ ہے کہ سکول چاہے سرکاری ہو ہا نجی بیت الخلاء شائد ہی کسی اسکول میں دیکھنے کو ملے۔ البتہ شہروں علاقوں میں چونکہ مجبوری ہے اس وجہ سے بیت الخلاء بحالت مجبوری اسٹوڈنٹس کواستعمال کرنے کی اجازت دی جاتی ہے لیکن بالائی علاقہ جات کے کسی بھی سرکاری اور نجی اسکولوں میں بیت الخلاء کا کوئی وجود ہی نہیں ہے اس وجہ سے سرکاری اور نجی اسکولوں کے بچے قرب جوار میں موجود کھیتوں اور خالی جگہوں میں رفع حاجت کرتے ہیں جو کہ ماحولیاتی آلودگی کے علاوہ کئی بیماریوں کا سبب بھی بن رہا ہے۔

عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ پرایئوٹ اور سرکاری اسکولوں میں بیت الخلاء نہ ہونے کی وجہ سے کھیتوں میں گندگی کے سبب پانی دینے جانا بھی بعض اوقات مشکل لگتا ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ تمام سرکاری اور نجی اسکولوں کو میں بیت الخلاء کی موجودگی کو یقینی بنائیں۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc