گلگت بلتستان میں مسینگ پرسن کا معاملہ مقامی حکومت بلکل خاموش اور قومی اسمبلی میں گونج۔

اسلام آباد( نیوز ڈیسک) ستائس جولائی کو سکردو سے گلگت آتے ہوئے گلگت کے رہائشی خرم شہزاد لاپتہ ہوگئے تھے۔ آج تقریباً دوماہ کا طویل عرصہ گزر چکا ہے تا ہم ابھی تک ان کا اتہ پتہ نہیں ہے۔ حکومت گلگت بلتستان کی خاموشی پر رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کی جانب سے قومی اسمبلی میں تحریک التواء کرائی گئی ہے۔ تحریک التواء میں اُنہوں نے کہا ہے کہ 27 جولائی2017ء کو خرم شہزاد ساکن آغا محلہ گلگت سکردو سے گلگت آتے ہوئے راستے میں لاپتہ ہو گئے ہیں لیکن گلگت بلتستان کی حکومت نے اس معاملے پر خاموشی اختیار کی ہوئی ہے۔

تحریک التواء میں سپیکر قومی اسمبلی سے گزارش کی گئی ہے کہ معاملے پر فوری طور پر نوٹس لیتے ہوئے تحقیقاتی کمیٹی بنائی جائے اور حفیظ الرحمن کی حکومت سے اس بارے میں پوچھ گچھ کی جائے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc