تازہ ترین

امریکہ نے ایران کے ساتھ جنگ کے امکانات کو مسترد کردیا۔

سوچی(نیوز آن لائن/ٹی این این)روس کے شہر سوچی میں وزیر خارجہ سرگئی لاوروف سے ملاقات کے بعد مائیک پومپیو کا کہنا تھا ’امریکہ ’بنیادی طور پر‘ ایران کے ساتھ کوئی تنازع نہیں چاہتا ہے۔ بی بی سی اردو کے مطابق روس میں بات کرتے ہوئے مائیک پومپیو کا کہنا تھا کہ امریکہ چاہتا ہے کہ ایران ’ایک نارمل ملک‘ کی طرح برتاؤ کرے تاہم اگر اس کے مفادات پر حملہ کیا گیا تو وہ اس کا بھر پور جواب دے گا۔
امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے روس میں ایران کے ساتھ بڑھتی ہوئی کشیدگی کے حوالے سے کہا کہ امریکہ چاہتا ہے کہ ایران ’ایک نارمل ملک‘ کی طرح برتاؤ کرے تاہم اگر اس کے مفادات پر حملہ کیا گیا تو وہ اس کا بھر پور جواب دے گا۔
دوسری جانب ایرانی سپریم لیڈر سید علی خامنہ ای دو ٹوک اعلان کرتے ہوئے کہا کہ تناؤ کے باوجود تہران اور واشنگٹن کے درمیان جنگ نہیں ہو گی اور مذاکرات ہم نہیں کریں گے۔سیّد علی خامنہ ای کا کہنا تھا کہ امریکا بخوبی جانتا ہے کہ جنگ اسکے مفاد میں نہیں، جب تک امریکا اپنا رویہ نہیں بدلے گا اسکے ساتھ مذاکرات ممکن نہیں۔
واضح رہے کہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی مزید اسووقت بڑھی جب متحدہ عرب امارات کے پانیوں میں دو سعودی آئل ٹینکرز سمیت چار ٹینکرز کو ‘سبوتاژ’ کرنے کی کوشش کی گئی، جس کے بعد امریکہ نے شبہ ظاہر کیا کہ اس کارروائی میں ایران یا اس کے حمایتی گروہ شامل ہیں تاہم اس واقعہ میں ایران کے ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔
اس سے قبل ایرانی صدر حسن روحانی کا کہنا ہے کہ ’یورنینم کی افروزدگی ملک میں رکھے گا تاہم ان کو کسی دوسرے ملک سے فروخت نہیں کیا جائے گا‘، حسن روحانی نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ ایران آئندہ 60 روز میں یورنیم افزودگی کا عمل دوبارہ شروع کرے گا۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*