چلاس ہسپتال ڈاکٹروں سے خالی ،مریض دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگئے۔گزشتہ ایک ہفتے سے چلاس ہسپتال میں ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے دور دراز سے علاج و معالجے کیلئے آنے والے مریض سخت پریشانی کے حالات میں مبتلا ہیں مگر پوچھنے والا کوئی نہیں ۔

چلاس(تحریر نیوز) دکھی انسانیت کے علمبرداروں ناور مسیحاوں نے چلاس کی عوام کو دکھی کر دیا ۔چلاس ہسپتال ڈاکٹروں سے خالی ،مریض دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگئے۔گزشتہ ایک ہفتے سے چلاس ہسپتال میں ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے دور دراز سے علاج و معالجے کیلئے آنے والے مریض سخت پریشانی کے حالات میں مبتلا ہیں مگر پوچھنے والا کوئی نہیں ہے ۔ہسپتال میں صفائی کے ناقص نظام ،لیبارٹری ٹیسٹ پر تعینات عملہ کی غیر موجودگی اور ایمرجنسی وارڈ میں ڈاکٹر نہ ہونے سے مریض بے موت مررہے ہیں مگر متعلقہ حکام کو احساس تک نہیں ہے ۔ان خیالات کا اظہار دیامر کے عوامی و سماجی حلقوں اور چلاس ہسپتال میں مریضوں کے ساتھ آئے ہوئے لوگوں نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ چلاس ہسپتال میں اندھیر نگری چوپٹ راج ،ڈاکٹر ایم ایس کی بات ماننے کیلئے تیار ہی نہیں ہیں اور اپنی مرضی سے جب چاہے آتے ہیں اور جب چاہے چھٹی کرجاتے ہیں ،ہسپتال کا نظام درہم برہم ہے ۔مریضوں نے وزیر اعلی اور چیف سیکرٹری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نوٹس لیکر چلاس ہسپتال کے ڈاکٹروں کا قبلہ درست کریں اور ڈاکٹروں کو وقت پر ہسپتال آنے کا پابند بنائیں ۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc