سابق دور حکومت کے کرپشن کنگز کی ضمانتیں منسوخ، ضمانت منسوخ ہونے پر ملزمان عدالت میں چیختے چلاتے رہے، 14 روزہ ریمانڈ پر دوبارہ نیب کے حوالے۔ اگلی باری محکمہ پی ڈبلیو ڈی کا ہونا چاہئے ،عوامی حلقے۔

گلگت (تحریر نیوز ) پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں کرپشن کے ذریعے اور اقرباءٰ پروری کی مثال قائم کرنے والے کرپشن کنگزمحکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے سابق سیکریٹری محمد علی یوگوی ، ایکسائز آفیسر ضمیر عباس اور محکمہ تعلیم کے سابق ڈائریکٹر محمد ناصر کی ضمانتیں سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان نے منسوخ کر دیں ۔

محکمہ تعلیم میں غیر قانونی بھرتیوں میں ملوث سابق ڈائریکٹر محمد ناصر،محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میں نمبر پلیٹس خریداری میں کرپشن میں ملوث ملزمان سابق سیکریٹری محمد علی یوگوی ، ضمیر عباس اور کو چیف کورٹ گلگت بلتستان نے ضمانت پر رہائی دی تھی جسکے خلاف نیب گلگت بلتستان نے ضمانتوں کی منسوخی کیلئے سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان میں اپیل دائر کی تھی جس پر عدالت عظمیٰ نے تینوں ملزمان کی ضمانتیں منسوخ کر دی،فیصلہ سُنتے ہیں تمام ملزمان حواس باختہ کھو گئے اور کمرہ عدالت میں چیختے چلاتے رہے لیکن نیب نے تینوں ملزمان کو گرفتار کرکے احتساب عدالت میں پیش کیا جہاں احتساب عدالت کے جج نے تینوں ملزمان کو 14روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کیا ہے ۔
محکمہ تعلیم میں نوکریوں کی فروخت میں ملوث سید ہادی کو حال ہی میں نیب نے گرفتار کیا ہے،عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ محکمہ پی ڈبلیو ڈی بھی اس وقت کرپشن کی گڑھ بن چُکی ہے خاص طور پر بلتستان ریجن میں چیف انجینئر کا دفتر اس وقت ٹھیکوں کی لین دین کا اڈہ بنا ہوا ہے لہذا وزیر تاجور کے مالی معاملات کی بھی تفتیش کرنے کی ضرورت ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc